ساحل سمندر پر چہل قدمی کرنے والوں کو اچانک سمندر کنارے ایک بیگ پڑا نظر آگیا، اس میں کیا تھا؟ کھول کر دیکھا تو ہر کسی کے رونگٹے کھڑے ہوگئے کیونکہ اس سے 7 سال پرانی۔۔۔

ساحل سمندر پر چہل قدمی کرنے والوں کو اچانک سمندر کنارے ایک بیگ پڑا نظر آگیا، ...
ساحل سمندر پر چہل قدمی کرنے والوں کو اچانک سمندر کنارے ایک بیگ پڑا نظر آگیا، اس میں کیا تھا؟ کھول کر دیکھا تو ہر کسی کے رونگٹے کھڑے ہوگئے کیونکہ اس سے 7 سال پرانی۔۔۔

  


ہوبارٹ(نیوز ڈیسک) دوردراز واقع تفریحی مقامات کی سیر کو تنہا جانے والوں کے ساتھ بسا اوقات جرائم یا حادثات بھی پیش آ جاتے ہیں۔ عموماً ایسے واقعات کا پتا جلد ہی چل جاتا ہے لیکن تسمانیہ کے ایک ویران ساحل پر پیش آنے والے خوفناک واقعے کا انکشاف سات سال بعد سامنے آیا ہے، جب اس واقعے کا نشانہ بننے والے بدقسمت فرد کی صرف ہڈیاں مل سکی ہیں۔

میل آن لائن کی رپورٹ کے مطابق تسمانیہ کی پولیس کا کہنا ہے کہ ہیون ویلی کے علاقے میں دو افراد کو سمندر کنارے چہل قدمی کرتے ہوئے ایک جگہ انسانی ہڈیاں دکھائی دیں جن کے قریب ہی کندھے پر لٹکایا جانے والا سفری بیگ بھی پڑا تھا۔ اس بیگ میں سے غیر ملکی کرنسی برآمد ہوئی ہے۔ جس جگہ یہ اشیاءملیں وہ تاہون ائیرواک نامی قصبے سے 10 کلومیٹر کی دوری پر ہے۔

ایٹمی حملے کی صورت میں وہ 11 چیزیں جو آپ کے پاس ہوں تو آپ کی جان بچ سکتی ہے

پولیس کا کہنا ہے کہ درستی کے ساتھ یہ کہنا مشکل ہے کہ ہڈیاں کتنی پرانی ہیں تاہم ابتدائی تحقیقات کے بعد یہ کہا جاسکتا ہے کہ شاید یہ چھ یا سات سال سے وہاں موجود تھیں۔ بیگ سے ملنے والی کرنسی سوئٹزرلینڈ اور فرانس کی ہے اور اس کے ساتھ ملنے والی رسیدوں سے معلوم ہوا ہے کہ یہ کرنسی دسمبر 2010ءمیں سوئٹزرلینڈ کے شہر زیورخ میں ایکسچینج کی گئی تھی۔ پولیس اس بات کا جائزہ لے رہی ہے کہ 2010ءکے آخر یا 2011ءکے دوران اس علاقے سے کسی غیر ملکی کے لاپتہ ہونے کی شکایت درج کروائی گئی یا نہیں، تاکہ بدقسمتی کا نشانہ بننے والے شخص کی شناخت معلوم ہو سکے۔

مزید : ڈیلی بائیٹس


loading...