سی پیک کی حمایت جاری رہے گی ، نواز شریف کا جانا ٹھہر گیا ، بہتر ہے عزت سے چلے جائیں : تحریک انصاف

سی پیک کی حمایت جاری رہے گی ، نواز شریف کا جانا ٹھہر گیا ، بہتر ہے عزت سے چلے ...

  

اسلام آباد(آئی این پی ،آن لائن )تحریک انصاف کے رہنما اسد عمر نے کہا ہے کہ نوازشریف کوگھرتوجانا ہے اپنی مرضی سے چلے جائیں تو بہتر ہے ، 15 ماہ قبل ہی عہدہ چھوڑ دیتے تو آج ان کے خاندان کو یہ دن نہ دیکھنا پڑتا۔ انہوں نے اسحاق ڈار اور وزیر اعظم نواز شریف سے استعفیٰ کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ ڈار صاحب آپ قوم کو یہ تو بتا دیں کہ چاہے حکومت مشرف کی تھی اور آپ کا بیان حلفی زبردستی لیا گیا تھا تو چیزیں کیوں اس کے مطابق نکل رہی ہیں۔ سی پیک کا کسی حکومت سے تعلق نہیں ہے ، کوئی بھی حکومت آئے چین پاکستان کا دوست اور سی پیک کی حمایت جار رہے گی، وزیر اعظم نواز شریف اگر استعفیٰ دے دیتے تو انہیں اپنے بچوں پر الزامات نہ سننے پڑتے۔مسلم لیگ ن والے بوکھلاہٹ کا شکار ہیں ن انہیں عمران خان کے ڈراؤنے خواب آتے ہیں سعد رفیق کہتے ہیں سازش ملک سے باہر تیار ہوئی،ایسا لگتا ہے ساری دنیا ان کے خلاف سازش میں ملوث ہے ،ن لیگ نے پاکستان کے تمام اداروں کو تباہ کرنے کا فیصلہ کیا ہے، ساری جماعتیں نواز شریف کو استعفیٰ دینے کا کہہ رہی ہیں،جے آئی ٹی کی رپورٹ وزیراعظم کے خلاف آگئی ہے، دفاع میں پیش کردہ دستاویزات جعلی نکلیں، سپریم کورٹ میں جعلی ٹرسٹ ڈیڈ جمع کرائی گئی، نقل کیلئے بھی عقل کی ضرورت ہوتی ہے شریف خاندان کی جعل سازی پر فوجداری مقدمے بنتے ہیں نواز شریف جے آئی ٹی کو جواب دینے سے کتراتے رہے انھوں نے جے آئی ٹی کے ساتھ تعاون نہیں کیا وزیراعظم کو اپنے بچوں اور قوم پر بھی رحم نہیں آتا،آپ کا جاناٹھہر گیاعزت سے چلے جائیں، سی پیک کاکسی حکومت سے تعلق نہیں، سی پیک منصوبہ کامیاب ہوگا سب کی حمایت حاصل ہے ۔بدھ کو پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے پی ٹی آئی رہنما اسد عمر اور شفقت محمو دنے کہا کہ نواز شریف بیٹے کی کمپنی میں چیئرمین اور تنخواہ دار ملازم رہے ۔دبئی کی جسٹس منسٹری نے لکھ کر دے دیا کہ ایسی ٹرانزیکشن کا ریکارڈ نہیں۔اسد عمر نے کہا کہ حدیبیہ پیپرملز سے متعلق اسحاق ڈار کابیان شواہد اور گواہان سے جوڑا تو اس کی حقیقت سامنے آئی ۔یہ بات انہوں نے پی ٹی آئی رہنما شفقت محمود کے ہمراہ نیشنل پریس کلب اسلام آباد میں نیوز کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہی۔ اسد عمر نے مزیدکہا کہ اسحاق ڈار نے حدیبیہ ریفرنس میں اعترافی بیان جمع کرایا جس کا ریکارڈموجود ہے، وہ کہتے رہے ہیں کہ ان سے زبردستی بیان حلفی لیا گیا۔ اگر یہی بات تھی تو اسحاق ڈار نے جے آئی ٹی میں ثبوتوں کاجواب کیوں نہیں دیا ؟۔ ڈار صاحب آپ سے درخواست ہے کہ قوم کو کم از کم یہ تو بتا دیں کہ چاہے حکومت مشرف کی تھی اور آپ کا بیان حلفی زبردستی لیا گیا تھا تو چیزیں کیوں اس کے مطابق نکل رہی ہیں۔انہوں نے کہا کہ سپریم کورٹ میں جعلی ٹرسٹ ڈیڈ جمع کرائی گئی ، نقل کیلئے بھی عقل کی ضرورت ہوتی ہے، نوازشریف بیٹے کی کمپنی میں چیئرمین اورتنخواہ دارملازم رہے۔ وزیر اعظم نے کہا تھا کہ اگر ان کے خلاف کوئی چیز آگئی تو وہ گھر چلے جائیں گے لیکن اب تو جے آئی ٹی رپورٹ ان کے خلاف آگئی ہے۔اب ان کے خلاف فوجداری مقدمات بنیں گے اس لیے وزیر اعظم کو استعفیٰ دے دینا چاہیے۔ اگر وہ پہلے ہی استعفیٰ دے دیتے تو انہیں یہ دن نہ دیکھنا پڑتا۔چیئرمین ایس ای سی پی کے حوالے سے ان کا کہنا تھا کہ ڈار صاحب آپ نے اپنے دوست کو ایس ای سی پی کا چیرمین لگایا، عدالت نے چیئرمین ایس ای سی پی کے خلاف مقدمہ درج کرنے کا حکم دیا ہے، اب کیا ایسا شخص جس کے خلاف ایف آئی آرکٹی ہوئی ہے اس کو ایس ای سی پی کا چیئرمین ہونا چاہئے یا اسحاق ڈار کا بھی وزیرخزانہ بنے رہنے کا جواز ہے۔ انہوں نے کہا کہ اسد عمر نے کہا کہ وزیراعظم کو ایک سے زیادہ دفعہ موقع دیا گیا، فیصلہ میں نے یا نواز شریف نے نہیں سپریم کورٹ نے کرنا ہے، اگر وزیراعظم 15 ماہ پہلے استعفی دے دیتے تو آج یہ دن نہ دیکھنا پڑتا، وزیراعظم نے قوم سے کہا اگرتحقیقات میں میرا نام آیا تو گھر چلا جاوں گا اورانہیں گھر تو جانا ہے اپنی مرضی سے چلے جائیں تو بہتر ہے۔ اسد عمر نے کہا کہ سی پیک کا کسی حکومت سے تعلق نہیں ہے، سی پیک کو پوری سپورٹ حاصل ہے، جو بھی حکومت آئے چین پاکستان کا دوست اور سی پیک جاری رہے گا۔ انہوں نے اسحاق ڈار کی جانب سے عمران خان کے خلاف دیے جانے والے بیانات پر رد عمل دیتے ہوئے اسحاق ڈار کا شکریہ ادا کیا اور کہا کہ اسحاق ڈار کا شکریہ بھی ادا کرنا چاہیں گے کہ وہ عمران خان کی عزت بڑھانے کیلئے بہترین کام کر رہے ہیں۔کیونکہ ڈار صاحب لوگوں کو یہ بتا رہے ہیں کہ ورلڈ کپ جیتنے والا قومی ہیرو اپنے لوگوں کے علاج کیلئے آپ کے دفتر کے باہر بھی بیٹھنے کیلئے تیار تھا۔اسد عمر نے مزید کہا کہ سپریم کورٹ کے بینچ نے کہا کہ نیب مرحوم و مغفور ہوگیا ہے اسے دفن کردینا چاہیے، ڈار صاحب نے نیشنل بینک آف پاکستان کا ایم ڈی سعید احمد کو لگایا حالانکہ اس کا نام سپریم کورٹ آف پاکستان نے ای سی ایل میں ڈالا ہوا ہے۔ ڈار صاحب!جب آپ کے لگائے ہوئے لوگوں کے خلاف ایف آئی آرز درج ہو رہی ہوں اور ان کے نام ای سی ایل میں ڈالے جا رہے ہوں تو آپ کو وزارت پر رہنے کا کوئی حق نہیں ہے۔آپ دینی آدمی ہیں، داتا دربار بھی جاتے ہیں، کیا آپ کو قوم کے لوٹے ہوئے پیسے میں سہولت کار بننا چاہیے؟۔ تحریک انصاف کے رہنما شفقت محمود نے کہا ہے وزیراعظم نواز شریف کا جانا ٹھہر گیا عزت سے چلے جائیں توبہتر ہے اپوزیشن جماعتیں وکلا سول سوسائٹی متحد اور وزیرعظم سے استعفیٰ کا مطالبہ کر رہے ہیں انہوں نے کہااسحاق ڈار مشرف دور میں وزیر خزانہ بنناچاہتے تھے کیونکہ اسحاق ڈار کو شریف خاندان کے ڈیل کر کے سعودی عرب جانے پر رنج تھا۔انہوں نے نوازشریف اور شہباز شریف کی یادداشت بہت کمزور ہے اور دونوں بھائیوں کو اپنی ذاتی زندگی کا بھی علم نہیں۔نواز شریف کہتے ہیں سناتھا حسین نواز جائیداد کے مالک ہیں ان کو یہ بھی نہیں مریم نواز اربوں کی مالکہ بن گئی جے آئی ٹی رپورٹ میں ہے شہباز شریف کو معلوم نہیں ان کے والدمیاں شریف نے ان کی کیا ڈیوٹی لگائی تھی،جے آئی ٹی میں طارق شفیع نے کہا مل لگانے کیلئے شہبازشریف نے دستخط کئے جبکہ شہباز شریف نے اپنے دستخطوں کو ماننے سے انکار کر دیا۔شفقت محمود کا کہناتھا ان لوگوں کے اداروں کو تباہ کرنے کا تہہ کر رکھا ہے جے آئی ٹی کو متنازعہ بنانے کیلئے سازش کا ڈھونگ رچایا گیا انہوں نے کہا لیگی رہنماؤں کے بیانات سن کر ہنسی آتی ہے ان لوگوں نے ملک کو بہت نقصان پہنچایاہے اب سازش کی باتیں کرنا چھوڑ دیں انہوں نے کہا پوری قوم بہترین تحقیقات کرنے پر جے آئی ٹی ارکان کو خراج تحسین پیش کرتی ہے۔

مزید :

صفحہ اول -