جامعہ زکریا 2017-18 ء کا 5 ارب 92 کروڑ کا بجٹ منظوری کیلئے تیار

جامعہ زکریا 2017-18 ء کا 5 ارب 92 کروڑ کا بجٹ منظوری کیلئے تیار

  

ملتان(سٹاف رپورٹر) بہاالدین زکریا یونیورسٹی کا نئے مالی سال کا بجٹ منظوری کیلئے 23جولائی کو سینڈیکیٹ میں پیش کیا جائے گا، تفصیل کے مطابق بہاالدین زکریا یونیورسٹی کا نئے مالی سال کا بجٹ فنانس اینڈ پلاننگ کمیٹی نے تجاویزکے ساتھ حتمی منظوری کیلئے سینڈیکٹ میں پیش کردیا تھا اور ہدایت کی تھی کہ بجٹ خسارہ کم کے 10سے 12فیصد کی حد میں لایا جائے ورنہ ایچ ای سی فنڈ جاری(بقیہ نمبر28صفحہ12پر )

نہیں کرے گاجس پر ایک کمیٹی بنائی گئی جس نے ہدایت کی روشنی میں سفارشات بھی تیار کرلی ہیں ، بجٹ اعداد وشمار کے مطابق یونیورسٹی نے مالی سال کا آغاز 44کروڑ روپے کے منافع کے ساتھ کیا تھا رواں مالی سال میں یونیورسٹی کا بجٹ 5ارب 92کروڑ کے حجم کا ہے ، جس میں آمدنی کا تخمینہ 5ارب 11کروڑ لگایا گیا ہے جبکہ اخراجات کا تخمینہ 5ارب 92کروڑ لگایا گیا ہے اس طرح یہ فی الحالی بجٹ 81کروڑ خسارے کا ہوگاتاہم بعد میں آنیوالی تجاویز کی روشنی کے بعد یہ خسارہ بڑھ کر ایک ارب سے زائد ہوگیا جس پر ایچ ای سی کے نمائندے نے ہدایت کی تھی کہ یہ خسارہ مجموعی بجٹ کا 20 سے زائد ہے اس لئے بجٹ خسارہ 5سے 8فیصد رکھا جائے کی جس کے بعد ایک کمیٹی بنادی گئی جس میں یونیورسٹی کے خزانہ دار ، ایچ ای سی ، ایچ ا ی ڈی کے نمائندے ، ڈاکٹر جاوید ، اور ڈاکٹر حسن بچہ شامل تھے ‘کمیٹی نے باہمی مشاورت سے فیصلہ کیا کہ جو ترقیاتی کام جاری ہیں ان مکمل کیا جائے گا نئے پراجیکٹ جنوری 2018سے قبل شروع نہیں کئے جائیں گے‘ اس سے 18کروڑ 40لاکھ روپے کی بچت ہوگی ،یونیورسٹی میں ایم فل کی سطح کا ویک اینڈ پروگرام شروع کیا جائے گا جس سے 14کروڑ روپے کی انکم ہوگی ، اساتذہ اورافسر کی 21نئی اسامیوں پر بھرتی نہیں کی جائے گی جس سے 2کروڑ 10لاکھ روپے کی بچت ہوگی‘ اسی طرح وہ اسامیاں جن کیلئے گزشتہ سا ل فنڈز رکھے گئے تھے ان پر بھرتی ملتوی کردی جائیگی اور جنوری 2018کے بعد ان پر بھرتی کاعمل شروع کیا جائے اور وہ مئی تک مکمل ہوجس سے یونیورسٹی کو10کروڑ روپے کی بچت ہوگی اس طرح بجٹ خسارہ ایچ ای سی کے معیار کے مطابق ہوجائے گا،یہ سفارشات بجٹ کے ساتھ 23جولائی کو ہونے والے سینڈیکیٹ اجلاس میں پیش کی جائے گی۔

مزید :

ملتان صفحہ آخر -