بستیاں تباہ ہونے کا خطرہ،سپربند کی تعمیر نہ ہونے پر احتجاج

بستیاں تباہ ہونے کا خطرہ،سپربند کی تعمیر نہ ہونے پر احتجاج

  

کروڑلعل عیسن(نمائندہ پاکستان)ملک محبوب ٹوٹن،ملک ایوب ٹوٹن، ملک امیر محمد،غلام شبیر،ملک سفیان اسراء ،سلطان محمود،ملک بشیر احمد،حاجی نذر حسین،حاجی کوڑو،عاشق حسین،بشیر حسین،ریاض حسین،منظور حسین،ملک مشتاق سیہڑ،ذکاء اللہ،بشیر اعوان،ملک حاجی رب نواز(بقیہ نمبر36صفحہ12پر )

،عبدالرحمن،ملک سعید حق نواز،اللہ ڈتہ،نذر حسین گاڈی ودیگر نے کہا کہ موضع راکھواں،واڑہ سیہڑاں،بستی چاہ ٹوٹن والا،بستی مومن ،بستی گرہ جٹاں،موضع بصیرہ،موضع شیہنہ والا،بستی بہار شاہ،بستی مکوڑی،بستی ڈپھی مکوڑی ودیگر بستیوں کو دریائی کٹاؤ سے دریا برد ہونے کا شدید خطرہ ہے انہوں نے کہا کہ اس وقت کٹاؤ کا سلسلہ تیزی سے جاری ہے جس سے ہزاروں ایکڑ زرعی زمین دریا برد ہوچکی ہے اور اب بستیوں کی آبادیوں کے نزدیک دریا پہنچ چکا ہے لیکن حکومتی نمائندے خواب خرگوش ہیں ضلع لیہ کا صوبائی وزیر برائے قدرتی آفات مہر اعجاز احمد اچلانہ نے ایک مرتبہ بھی متاثرہ علاقوں کا دورہ کرنا بھی گوارہ نہیں کیا ایم این اے صاحبزادہ فیض الحسن نے الیکشن سے قبل وعدہ کیا تھا کہ سپر بند تعمیرکیا جائے گا لیکن 4سال گزرنے اور مسلم لیگ ن کی وفاقی اور صوبائی حکومت ہونے کے باوجود وہ ابھی تک سپر بندکا کام شروع نہیں کرا سکے ابھی بھی وہ سرف وعدے اور وعید پرٹرخا رہے ہیں لیکن اب لوگوں کا صبر کا پیمانہ لبریز ہو چکا ہے پہلے کروڑوں روپے کی زمینیں دریا کی نظر ہوتی دیکھتے رہے اب گھر اور مکانات کو بھی اپنی آنکھوں سے دریا بر دہوتا دیکھ رہے ہیں ، اس موقعہ پر لیگی راہنماء جاوید علی سلیمی نے کہا کہ صوبائی وزیر برائے قدرتی آفات مہر اعجاز احمد اچلانہ ، ایم این اے صاحبزادہ فیض الحسن سے مطالبہ کرتے ہیں کہ فوری طور پر متاثرہ علاقوں کا دورہ کریں اور ایک ہفتہ کے اندر اندر سپر بند کی تعمیر کے کام کا آغاز کریں ۔

مزید :

ملتان صفحہ آخر -