مظفر گڑھ، پارکو کے قریب نجی کمپنیوں کے آئل ڈپو خطرے کی گھنٹی

مظفر گڑھ، پارکو کے قریب نجی کمپنیوں کے آئل ڈپو خطرے کی گھنٹی

مظفر گڑھ(نامہ نگار ) پارکو کی نزدیک آئل ٹینکر میں آگ بھڑکنے سے 16 افراد جاں بحق ہوگئے تھے اس کے بعد احمد پور شرقیہ حادثے میں دو سو سے زائد قیمتی جانوں نے ضیاع کے بعد پار(بقیہ نمبر55صفحہ12پر )

کو کی نزدیکے آبادیوں کے رہائشی پریشانی کا شکار ہین۔قبل ازیں پارکو حکام کی جانب سے سیفٹی کے لیئے نجی تیل کمپنیوں کے ٹینکرز پارکو میں داخل ہونے پر پابندی لگاتے ہوئے تیل کمپنیوں کو ہدایت کی گئی تھی کہ وہ پارکو سے دور اپنے بیس کیمپ ڈپو قائم کریں اور پارکو سے بزریعہ پائپ لائن تیل لے کر اپنے ٹینکرز لوڈ کریں بعد ازاں ایک نجی کمپنی نے پارکو کی قریب کی اپنا بیس کیمپ قائم کر دیا جبکہ دیگر چند کمپنیون نے بھی 500گز کی حدود میں اپنی بیس کیمپ قائم کر لیئے ہیں،جسکے بعد پٹرول اور ڈیزل سے بھرے آئل ٹینکر پارکو اور قریبی آبادوں کے قریب ہی کھڑے رہتے ہیں جس سے کسی بھی وقت ممکنہ بڑے حادثے کا اندیشہ ہے۔ذرائع کا کہنا ہے کہ نجی تیل کمپنیوں کی جانب سے اگر پارکو سے 1000گز دور بیس کیمپ قائم کیئے جاتے تو کروڑوں روپے پائپ لائن پر اخراجات ہوتے اسی لیئے نجی کمپنیوں نے قریب ترین جگہ حاصل کرکے اپنے ڈپو قائم کر لیئے ہیں.

مزید : ملتان صفحہ آخر


loading...