نشتر میں نجی کمپنی سے4ائیر کنڈیشنز بطور نذرانہ وصولی کا انکشاف

نشتر میں نجی کمپنی سے4ائیر کنڈیشنز بطور نذرانہ وصولی کا انکشاف

  

ملتان(وقائع نگار)ایم ایس نشتر ہسپتال کی جانب سے مختلف وارڈوں کیلئے234ائیر کنڈیشنر سپلائی کرنے والی نجی کمپنی کو بلوں کی ادائیگی کرنے کے عوض چار ائیر کنڈیشنز بطور’’نذرانہ‘‘وصول کرنے کا انکشاف ہوا ہے۔جو ایم ایس نے نجی رہائش گاہ پر نصب کروانے کیلئے بھجوادئیے ہیں۔اس بارے میں ذرائع کا کہنا ہے کہ نشتر ہسپتال ملتان کی انتظامیہ نے سابق ایم ایس ڈاکٹر عاشق حسین کے دور (بقیہ نمبر58صفحہ12پر )

میں نشتر ہسپتال کے مختلف وارڈز میں نئے ائیر کنڈیشنز کی تنصیب کیلئے نجی کمپنی سے234اے سی خریداری کی مد میں3کروڑ سے زائد رقم کا معاہدہ کیا مذکورہ کمپنی نے معاہدے کے مطابق ماہ جون2017ء میں234ائیر کنڈیشنز ہسپتال کو مکمل کردی ہے تاہم ذرائع کے مطابق نجی کمپنی کو3کروڑ روپے سے زائد بلوں کی ادائیگی کے لئے موجودہ ایم ایس نشتر ہسپتال ڈاکٹر عبدالرحمن قریشی کی جانب سے چار نئے ائیر کنڈیشنز بطور نذرانہ وصول کئے گئے ہیں جن کو مذکورہ ایم ایس نے اپنی نجی رہائش گاہ میں نصب کروانے کیلئے بھجوا دئیے ہیں اس ضمن میں عوامی و سماجی حلقوں نے وزیراعلیٰ پنجاب سے مذکورہ صورتحال کا فوری نوٹس لیتے ہوئے تحقیقات اور سخت کارروائی کا مطالبہ کیا ہے اس بارے میں جب نشتر ہسپتال کے ایم ایس ڈاکٹر عبدالرحمن قریشی سے پوچھا گیا تو انہوں نے کہا ہے کہ یہ تمام تر الزامات جھوٹے اور بے بنیاد ہیں آپ اس معاملے کو خود چیک کرسکتے ہیں۔

مزید :

ملتان صفحہ آخر -