باجوڑ ،خارجیل میں قیدیوں کو خوراک کی فراہمی بند ہونے کا خدشہ

باجوڑ ،خارجیل میں قیدیوں کو خوراک کی فراہمی بند ہونے کا خدشہ

  

باجوڑ ایجنسی ( نمائندہ پاکستان)باجوڑ ایجنسی خار جیل میں قیدیوں کو خوراک کی فراہمی بند ہونے کا خدشہ فاٹا سیکرٹریٹ کے اعلی حکام خاموش تماشائی ۔گزشتہ 5سالوں کے دوران خار جیل قیدیوں کو خوراک کی فراہمی کے بعد فاٹا سیکرٹریٹ میں ڈپٹی فنانس سیکرٹری سلیمان نے ڈائیٹ ٹھیکہ داروں کے ڈھائی کروڑ روپے کی بھاری رقوم دبانے کی وجہ سے خار جیل میں قیدیوں کو خوراک کی فراہمی بند ہونے کا خدشہ پیدا ہوا ہے تفصیلات کے مطابق فاٹا میں پولیٹیکل لاک آف (جیل) میں سالانہ ہزاروں قیدیوں کو پولیٹیکل انتظامیہ امن ومان کوبرقرار رکھنے کیلئے قید کر دیتی ہے جس سے فاٹا میں پہلے کی نسبت اب قیام امن تسلی بخش ہے زرائع کے مطابق فاٹا سیکرٹریٹ میں تعینات ڈیٹی فنانس سیکرٹری سلیمان نے باجوڑ ایجنسی خار جیل میں قیدیوں کو خوراک فراہم کرنے والے ڈائیٹ ٹھیکہ داروں کی ڈھائی کروڑ روپے دبا دیے ہیں فاٹا سیکرٹریٹ فاٹا میں دیگر ڈائیٹ ٹھیکہ داران اور دیگر محکموں کو ان کے بلز پاس کرتے ہیں لیکن باجوڑ ایجنسی کے ڈائیٹ ٹھیکہ داران کے ساتھ ان کا رویہ معاندانہ ہے گزشتہ 10سالوں سے اسی پوسٹ پر براجماں ہو کر ون مین شو بن بیٹھا ہے کرپشن کا بادشاہ باجوڑ خار جیل کی بلز کو منظوری کیلئے مرکزی حکومت کو جون کے آخری دنوں اسلام آباد ارسال کرتا ہے لیکن پھر مہینوں کے انتظار کے بعد بتاتا ہے کہ سال کے آخری دن ختم ہونے کو ہے اور فائل کو چھپالیتا ہے ٹھیکہ داران کو بھاری رشوت دینے پر مجبور کیا جارہا ہے زرائع کے مطابق فاٹا سیکرٹریٹ کے اعلی حکام اڈیشنل چیف سیکرٹری بار بار درخواست دینے کے باوجود بقایاجات کی ادائیگی نہیں کی جاتی جس کے بعد ڈائیٹ ٹھیکہ داروں نے کیس فاٹا سروس ٹریبونل ئر کی جس کے بعد بھی کوئی شنوائی نہیں ٹھیکہ داران نے پھر مجبور ہو کر پشاور ہائی کورٹ میں کیس دائر کی انہوں نے بھی ان کے حق میں فیصلہ دیا لیکن پھر بھی کوئی دادرسی نہیں ہوئی اور آخر کار ان کے خلاف توہین عدالت کی رٹ دائر کی فاٹا سیکرٹریٹ فاٹا کے بجٹ میں ہر سال فاٹا جیلوں کے علاوہ تمام ڈیپارٹمنٹ کو اربوں روپے دیتے ہیں لیکن باجوڑ ٹھیکہ داران کے ساتھ ظلم گزشتہ کئی سالوں سے جاری ہے اگر حکومت جیل قیدیوں کو خوراک کی فراہمی نہیں کر سکتے تو پھر باجوڑ جیل بند کرے کیونکہ تمام اداروں لاء اینڈ آرڈر کے بالا افسران نے انکھیں بند کر دی ہے ٹھیکہ داران نے گورنر خیبر پختونخوا ،پشاور ہائی کورٹ ،سپریم کورٹ آف پاکستان سے ازخود نوٹس لینے اور فاٹا سیکرٹریٹ کے خلاف سخت قانونی کاروائی کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ فاٹا سیکرٹریٹ کی وجہ سے مسائل کم ہونے کے بجائے مزید بڑھ گئے ہیں اور ٹھیکہ داران کے بار بار فریاد کو سنے والا کوئی نہیں

مزید :

پشاورصفحہ آخر -