بھری ہوئی بوتل

بھری ہوئی بوتل
بھری ہوئی بوتل

  

بھری ہوئی بوتل

ایک سردار جی شراب سے تنگ آگئے اور خالی بولیں توڑنے لگے۔

ایک بوتل توڑی ”تیری وجہ سے میری نوکری گئی“۔

دوسری بوتل توڑی ”تیری وجہ سے میرا گھر تباہ ہوا“۔

تیسری بوتل توڑی ”تیری وجہ سے میری بیوی چھوڑ کے چلی گئی“۔

چوتھی بوتل اٹھائی تو وہ بھری ہوئی تھی۔ سردار نے اسے اٹھا کر ایک طرف رکھااورکہا”توں سائیڈ تے ہو جا، تیرا کوئی قصور نئیں“

(راحت ہما ۔جالندھر)

مزید :

لافٹر -