مقبوضہ کشمیر میں تاریخی ہڑتال اور احتجاج سے دنیا کی آنکھیں کھل جانی چاہئیں, مظلوم کشمیری انڈیا کا غاصبانہ قبضہ قبول کرنے کیلئے تیار نہیں:عبدالرحمن مکی

مقبوضہ کشمیر میں تاریخی ہڑتال اور احتجاج سے دنیا کی آنکھیں کھل جانی چاہئیں, ...
 مقبوضہ کشمیر میں تاریخی ہڑتال اور احتجاج سے دنیا کی آنکھیں کھل جانی چاہئیں, مظلوم کشمیری انڈیا کا غاصبانہ قبضہ قبول کرنے کیلئے تیار نہیں:عبدالرحمن مکی

  

لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن)جماعۃالدعوۃ سیاسی امور کے سربراہ پروفیسر حافظ عبدالرحمن مکی نے کہا ہے کہ سری نگر میں پاکستان زندہ باد کے نعرے لگانے والے کشمیری حق رکھتے ہیں کہ پاکستان ان کے شانہ بشانہ کھڑا ہو،شہداء کی قربانیوں کی بدولت تحریک آزادی زندہ ہے، یوم شہداء کشمیر پر مقبوضہ کشمیر میں تاریخی ہڑتال اور احتجاج سے دنیا کی آنکھیں کھل جانی چاہئیں کہ مظلوم کشمیری انڈیا کا غاصبانہ قبضہ قبول کرنے کیلئے تیار نہیں، حکومت پاکستان سفارتی محاذپر بھارتی ریاستی دہشت گردی کو بے نقاب کرے، بی جے پی سرکار ظلم و تشددکے ذریعہ کشمیریوں کی آواز دبانے میں کامیاب نہیں ہو سکتی، 16جولائی کو اسلام آباد اور 19جولائی کو لاہور میں بڑی شہداء کشمیر کانفرنسیوں ہوں گی۔

تفصیلات کے مطابق حافظ عبد الرحمن مکی کا کہنا تھا کہ کشمیری اپنی آزادی کے لئے جب بھی آواز بلند کرتے ہیں تو انڈیا تشدد کے ذریعے انکی آواز کو دبانے کی کوشش کرتا ہے،دکھ اس بات کا ہے کہ کشمیر میں بہت کچھ ہو رہا ہے لیکن حکومت پاکستان آزادی کشمیر کے لئے صحیح معنوں میں کردار ادا نہیں کر رہی،کشمیری مسلمانوں پر بھارتی مظالم عالمی دنیا کو نظر کیوں نہیں آتے؟مسلمان جہاں بھی ہیں ان کی آزادی کو دبایا گیا ہے اور اس پر عالمی ضمیر مردہ ہو چکا ہے،بیرونی قوتوں کی دشمنی انتہا کو پہنچ چکی ہے،یہودی وصلیبی لابیاں متحرک اور ہندو ان کے ساتھ ملے ہوئے ہیں۔ انہوں نے کہاکہ کشمیر و فلسطین سمیت دیگر خطوں میں مسلمانوں کی آزادیاں سلب کرنے کی کوششیں کی جارہی ہیں، سرینگر میں پاکستان زندہ باد کے نعرے لگیں اورپاکستان خاموش رہے، یہ رویہ درست نہیں ہے۔انہوں نے کہا کہ  انڈیا کے ساتھ دوستی کی وجہ سے پاکستانی حکمران کشمیریوں کی مددوحمایت کے حوالہ سے دباؤ کا شکار ہیں، یہ بڑا تکلیف دہ مرحلہ ہے،تمام بین الاقوامی فورمزپرمسئلہ کشمیر اجاگر کر کے پوری دنیا کو کشمیریوں کی آواز سنائی جائے۔عبدالرحمن مکی نے کہاکہ اس وقت اسلام اور کفر کی جنگ جاری ہے، مظلوم کشمیری اپنی آزادی اورپاکستان کے ساتھ شامل ہونے کی بات کرتے ہیں تو ا ن پر گولیاں برسائی اور شیلنگ کی جاتی ہے،کشمیریوں کو گرفتار اور ان پر بغاوت کے مقدمے بنائے جاتے ہیں۔انہوں نے کہا کہ کشمیریوں کو اس وقت مضبوط پیغام دینے کی ضرورت ہے کہ جہاں تمہارا خون گرے گا وہاں ہمارا بھی خون گرے گا، بی جے پی نے شروع سے ہی کشمیر کے مسئلہ پر پر تشدد رویہ اختیار کیا اور کشمیر کی تحریک آزادی کو کچلنے کا پروگرام بنایا،اب آزادی کی تحریک منظم ہو چکی ہے اور لوگ قربانیاں دے رہے ہیں،کشمیر میں جتنا تشدد بڑھے گا تحریک آزادی اتنی ہی تیز ہو گی اور بالآخر انڈیا کو آزادی دینا پڑے گی اور کشمیری آزادی حاصل کر کے رہیں گے۔

مزید :

لاہور -