دنیا کے سست ترین ممالک کی فہرست جاری، پاکستانیوں کا کونسا نمبر ہے؟ جواب آپ کے تمام اندازے غلط ثابت کردے گا

دنیا کے سست ترین ممالک کی فہرست جاری، پاکستانیوں کا کونسا نمبر ہے؟ جواب آپ کے ...
دنیا کے سست ترین ممالک کی فہرست جاری، پاکستانیوں کا کونسا نمبر ہے؟ جواب آپ کے تمام اندازے غلط ثابت کردے گا

  

واشنگٹن (مانیٹرنگ ڈیسک)دنیا کے سست ترین لوگ کس ملک میں پائے جاتے ہیں اور آپ سست اقوام کی بین الاقوامی فہرست میں کس مقام پر ہیں؟ امریکا کی سٹینفرد یونیورسٹی نے مختلف ملکوں سے جمع کئے گئے ڈیٹاکی بناءپر ایک جامع رپورٹ کی صورت میں یہ تفصیل شائع کر دی ہے۔

میل آن لائن کے مطابق سائنسدانوں نے دنیا بھر سے سات لاکھ سے زائد افراد سے جمع کئے گئے سمارٹ فون ڈیٹا کی بنیاد پر تیار کی گئی رپورٹ میں بتایا ہے کہ دنیا کے مختلف ممالک میں رہنے والے لوگ اپنی روزمرہ زندگی میں کس قدر سست یا چست ہیں۔ ہانگ کانگ اس فہرست میں سب پر سبقت لے گیا ہے، جس کے شہری روزانہ اوسطاً 6880 قدم اٹھاتے ہیں، یعنی وہ ہر روز تقریباً ساڑھے تین میل پیدل چلتے ہیں۔

صنف نازک خواتین نہیں مرد ہیں، نئی کتاب کے دعوے نے تہلکہ مچادیا، ثبوت بھی دے دئیے

انڈونیشیا کے شہری دنیا میں سب سے سست قرار پائے ہیں، جو کہ دن بھر میں بمشکل ساڑھے تین ہزار قدم اٹھاپاتے ہیں۔ بدقسمتی سے پاکستان میں بھی صورتحال کچھ زیادہ مختلف نہیں ہے اور ہمارا شمار بھی سست اقوام میں ہی کیا گیا ہے۔

اس تحقیق میں یہ بھی بتایا گیا ہے کہ برطانیہ کے لوگ روزانہ تقریباً 5444 قدم اٹھاتے ہیں یعنی تین میل سے کچھ کم فاصلہ طے کرتے ہیں۔ امریکی بھی کافی پیچھے رہ گئے ہیں اور روزانہ اوسطاً 4774 قدم اٹھاتے ہیں۔

سائنسی جریدے نیچر میں شائع ہونے والی اس تحقیق کے مطابق دنیا بھر میں بسنے والوں کے روزانہ اٹھائے گئے قدموں کی اوسط معلوم کی جائے تو یہ تقریباً 4961 قدم بنتی ہے، جو کہ تقریباً اڑھائی میل فاصلہ بنتا ہے۔

سبک رفتاری میں کینیڈا، آسٹریلیا اور نیوزی لینڈ بھی عالمی اوسط سے کافی پیچھے پائے گئے ہیں۔ یہ بھی بتایا گیا ہے کہ سست رفتاری کا مظاہرہ کرنے والی اقوام میں موٹاپے اور اس کے نتیجے میں پیدا ہونے والی بیماریوں کی شرح نسبتاً زیادہ پائی جاتی ہے۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -