ملک میں سیاست اور مذہب کے نام پر انتشار نہیں پھیلانے دیں گے،مکمل اور غیر جانبدارانہ احتساب پوری قوم کی آواز ہے:علامہ طاہر اشرفی

ملک میں سیاست اور مذہب کے نام پر انتشار نہیں پھیلانے دیں گے،مکمل اور غیر ...
ملک میں سیاست اور مذہب کے نام پر انتشار نہیں پھیلانے دیں گے،مکمل اور غیر جانبدارانہ احتساب پوری قوم کی آواز ہے:علامہ طاہر اشرفی

  


ملتان (ڈیلی پاکستان آن لائن)پاکستان علماء کونسل کے مرکزی چیئر مین علامہ حافظ طاہر محمود اشرفی نے کہاہے کہ ملک میں سیاست اور مذہب کے نام پر انتشار نہیں پھیلانے دیں گے ، بیت اللہ ، مسجد نبویﷺ  اور پارا چنار میں خود کش حملے کرنے والے خارجی اور تکفیری ہیں،انتہاء پسندی اور دہشت گردی کے خلاف ملک گیر تحریک میں تمام مکاتب فکر شریک ہیں، مکمل اور غیر جانبدارانہ احتساب پوری قوم کی آواز اور آرزو ہے ، جے آئی ٹی کی تحقیقات پر سپریم کورٹ کو آزادانہ اور خود مختارانہ فیصلہ کرنے دیا جائے ، قومی وحدت کو لسانی ، نسلی اور مسلکی تعصب پر تقسیم نہیں ہونے دیں گے ، پاکستان میں فرقہ وارانہ بنیادوں پر کسی صورت تصادم نہیں ہونے دیا جائے گا۔

ان خیالات کااظہار انہوں نے پاکستان علماء کونسل ملتان کے زیر اہتمام ملتان پریس کلب میں ہونے والی ’’ وحدت امت کانفرنس ‘‘ سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ اس موقع پر 30 سے زائد مذہبی و سیاسی جماعتوں اور تمام مکاتب فکر کے قائدین نے بھی شرکت اور خطاب کیاجن میں مولانا عبد الحق مجاہد ، مولانا عبد الحمید وٹو ، مولانا سلطان محمود ضیاء ، مولانا ایوب مغل ، مولانا انوار الحق مجاہد ، مولانا غلام دستگیر حامدی ، چوہدری شبیر یوسف گجر ، مولانا حبیب الرحمن عابد ،مولانا محمد احمد ، مولانا علامہ عنایت اللہ رحمانی ، مخدوم عباس رضا مشہدی ، علامہ عبد الرحیم گجر ، حافظ ظفر قریشی ، ملک منظور اعوان ، مولانا عمر عثمان ، مولانا محمد اشفاق پتافی ، مولانا عامر محمود نقشبندی ، علامہ سید عون محمد شاہ نقوی ، محمد علی رضوی ، مولانا شفیق اللہ صدیقی ،رانا محمد اسلم ساغر ،ملک محمد عمر کمبوہ موجود تھے۔ اس موقع پر علامہ طاہر محمود اشرفی نے کہا  کہ پاکستان اور اہل اسلام کے خلاف سازشیں ہو رہی ہیں ، مسلم امۃ کی وحدت سے ہی مسلمانوں کے مسائل کو حل کیا جا سکتا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ سانحہ پارا چنار کا مقصد ملک کے اندر فرقہ وارانہ تشدد کو پھیلانے کا تھا جسے آرمی چیف اور مذہبی قوتوں کی کوششوں سے ناکام بنایا گیا ، اسلامی ممالک کی سلامتی اور امن سے کھیلا جا رہا ہے ،اسلام دشمن قوتیں پاکستان اور سعودی عرب میں داخلی انتشار پیدا کرنا چاہتی ہیں ، بعض سیاسی اور حکومتی عناصر پاکستان اور عرب ممالک کے تعلقات خراب کرنے کی سازشیں کر رہے ہیں قوم اور حکومت کو اسی پر غور کرنا چاہیے ۔ انہوں نے کہا کہ جے آئی ٹی کی رپورٹ کے بعد ملک میں بحران پیدا کرنے کی کوشش کی جا رہی ہے ، محراب و منبر کی قوت پاکستان میں کسی کو انتشار پیدا نہیں کرنے دے گی ،  وطن عزیز پاکستان میں امن و سلامتی اور ارض الحرمین الشریفین کی سلامتی اور استحکام کیلئے تمام مکاتب فکر متحد اور منظم ہیں ،  پاکستان علماء  کونسل اور اس کی حلیف جماعتیں ماہ اگست کو ’’ ماہ استحکام پاکستان‘‘  کے طور پر منائیں گی۔انہوں نے کہا کہ استعفیٰ دینا وزیر اعظم کا اختیار ہے ، اگر وزیر اعظم اخلاقی طور پر استعفیٰ ہونے کو تیار نہیں تو عدالت کے فیصلہ کا انتظار کیا جائے اور عدالت کو بغیر دباؤ کے فیصلہ کرنے دیا جائے ۔انہوں نے کہا کہ پاکستان دشمن قوتیں سی پیک کے منصوبے کو ناکام بنانے کیلئے کوشاں ہیں لیکن قوم متحد ہو کر سی پیک کی حفاظت کرے گی ۔

کانفرنس میں ایک قرار داد کے ذریعے سیاسی و مذہبی قیادت سے اپیل کی گئی کہ وہ سیاسی معاملات کو بات چیت اور مذاکرات کے ذریعے حل کریں اور کسی بھی طرح سے تصادم اور انارکی سے ملک کو بچایا جائے ، ایک اور قرارداد میں آرمی چیف کی کوششوں سے سانحہ پارا چنار کے مسائل کو حل کرنے اور سی پیک کو ہر صورت جاری رکھنے کے اعلان کا خیر مقدم کیا گیا اور خراج تحسین پیش کیا گیا ، ایک اور قرار داد میں حکومت سے مطالبہ کیا گیا کہ سوشل میڈیا پر رسول اکرمﷺ  اور مقدس شخصیات کی توہین کے ناپاک عمل کو فوری طور پر بند کروایا جائے ، اور 295/C کے مطابق گستاخی کرنے والوں کے خلاف کاروائی کی جائے۔ ایک قرار داد میں 29 رمضان المبارک کو بیت اللہ پر خود کش حملہ ناکام بنانے پر سعودی عرب کی قیادت اور سلامتی کے اداروں کو خراج تحسین پیش کیا گیا۔

مزید : ملتان


loading...