سکل ڈویلپمنٹ اور کاروباری افراد میں تعلق بڑھایا جارہا ہے ، پراجیکٹ ڈائریکٹر سی پیک

سکل ڈویلپمنٹ اور کاروباری افراد میں تعلق بڑھایا جارہا ہے ، پراجیکٹ ڈائریکٹر ...

اسلام آباد (اے پی پی) چین پاکستان اقتصادی راہداری ( سی پیک )کے پراجیکٹ ڈائریکٹر حسان داؤد بٹ نے کہاہے کہ پاکستان میں اقتصادی و صنعتی ترقی کیلئے پاک چین اقتصادی راہداری کے تحت مشترکہ کاروباری ماڈل کے ساتھ ساتھ سکل ڈویلپمنٹ اور کاروباری افراد کے باہم روابط کو فروغ دیا جا رہا ہے، سی پیک کے تحت انفراسٹرکچر، توانائی، اقتصادی زونز کے قیام سمیت مختلف منصوبہ جات کی تکمیل سے پاکستان نہ صرف پائیدار ترقی کے حصول میں کامیاب ہوگا بلکہ لاکھوں جوانوں کو روزگار کے مواقع میسر آئیں گے اور عوام کی سماجی بہبود بھی یقینی ہوگی، منفی تاثرات کے خاتمے اور منصوبے کے بارے میں بہتر آگاہی کے ضمن میں ذرائع ابلاغ کا کردار بہت اہمیت کا حامل ہے۔ انہوں نے کہاکہ سی پیک کے تحت توانائی، شاہراہوں اور گوادر بندرگاہ کو ترقی دینے کے منصوبوں پر تیز رفتاری سے کام جاری ہے، یہ منصوبے اپنی مقررہ مدت کے اندر مکمل ہو رہے ہیں، ان منصوبوں کی تکمیل سے پاکستان کی معیشت کی راہ میں حائل رکاوٹوں کو دور کرنے میں بڑی حد تک کامیابی حاصل ہوگی۔ ان کا کہنا تھا کہ سی پیک کے تحت جاری پاکستان اور چین کا تعاون صنعتی ترقی کے مرحلے میں داخل ہو گیا ہے، اس مرحلے میں نہ صرف چین بلکہ خطے کے تمام ممالک بھرپور شرکت کر سکتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان نے سی پیک کے تحت قائم ہونے والے خصوصی اکنامک زونز میں سرمایہ کاری کیلئے انتہائی لبرل پالیسی وضع کر رکھی ہے اور اس تعاون کا بنیادی مقصد جوائنٹ وینچرز کو فروغ دینا ہے تاکہ پاکستانی صنعتوں کی پیداواری صلاحیتوں میں اضافہ کیا جا سکے اور اسی شعبے کی بدولت پاکستان نہ صرف پائیدار ترقی کے حصول میں کامیاب ہوگا بلکہ یہاں لاکھوں نو جوانوں کو روزگار کے مواقع میسر آئیں گے۔

انہوں نے کہا کہ گزشتہ چار سال کے دوران سی پیک سے معاشی کساد بازاری کے خاتمے، پائیدار ترقیاتی اہداف کے حصول میں مدد ملی ہے۔ انہوں نے کہا کہ بیلٹ اینڈ روڈ منصوبہ کے ذریعے چین، سنٹرل ایشیا، اورجنوبی ایشیاء کو منسلک کیا جائے گا، یہ معاشی ترقی کا راستہ ہے اور پاکستان اس کا مرکز ہے۔ انہوں نے کہا کہ سی پیک ایک گیم چینجر منصوبہ ہے، جس سے خطے کے 3 ارب لوگ مستفید ہوں گے۔

مزید : کامرس