چائلڈ لیبر کیسے ختم ہو سکتی ہے؟

چائلڈ لیبر کیسے ختم ہو سکتی ہے؟

مکرمی!یہ کئی ماہ قبل کاواقعہ ہے جب مجھے اینٹوں کے حصول کے لئے ایک بھٹہ پر جانے کا اتفاق ہوا تودیکھا کہ وہاں چائلڈ لیبرختم کرنے کے حق میں ایک بڑا بینر آویزاں ہے میرے خیال میں چائلڈ لیبر کاخاتمہ تو اسی وقت ہو جاتا ہے جب بھٹہ کے مالکان مصمم ارادہ کر لیتے ہیں اور ارادے پر عمل پیرا ہونا بینر اور اشتہاروں کا مرہونِ منت نہیں ہوتا میرے استفسار پربھٹہ مالک کے چہرے پر ڈر کا عنصر نمایاں تھااس نے بتایاکہ ایسے کام دکھاوے اور افسران کی 

خوشنودی کی خاطر کرنے پڑتے ہیں لیکن جب حکومت کی طرف سے کوئی سختی آجاتی ہے تو وہی عملہ ناجائز بھی کر جاتا ہے جیسا کہ مبینہ طور پراہلکار ایک بھٹہ پر گئے اور وہاں بچوں کو کھیلتا دیکھ کر کہا کہ آپ کو اینٹ بنانا آتی ہے انہوں نے کہا، ہاں،تو انعام کا لالچ دے کر بچوں سے اینٹ بنوا کر تصویریں کھینچ لیں اس پربھٹہ والے کو جرمانہ ہو گیا اور عملہ کی کارکردگی بن گئی میں نے کہا کوئی لے دے کے بات نہیں بنتی اس نے کہا ایک مقامی گاؤں کا اہلکارتو ہے مگر حکومتی دباؤ اورمجبوری میں کسی کو تو قربانی کا بکرا بنانا پڑتا ہے میں نے اس واقعہ کو سنجیدگی سے لیا ہے میری نظر میں اگر یہ بات غلط بھی ہوتو پھر بھی کچھ کارندے رشوت اختیارات کے غلط استعمال رعونت اور تکبر سے پاک نہیں ہیں چائلڈ لیبر کے خلاف حکومتی اقدامات کو عوامی پذیرائی اور ممکنہ کامیابی اُس وقت حاصل ہو سکتی ہے جب ریاست فلاحی ریاست کے معیار پر پورا اُتر رہی ہواور جو لوگ بے روزگار ہوں اُن کے روزگارکاانتظام کررہی ہو یابے روزگاری الاؤنس مہیا کررہی ہو تا کہ غریب لوگ روٹی کے چکر سے آزاد ہو کر اپنے بچوں کو تعلیمی اداروں میں بھیجنے پر آمادہ ہو سکیں لیکن جب ریاست اپنے فرائض کی بجا آوری نہ کر پا رہی ہو تو غربت میں گھرے ہوئے لوگ اپنے بچوں کو چائے شاپ کریانہ سٹور جنرل سٹور کپڑے کی دوکانوں آٹو مکینک ورکشاپ اینٹوں کے بھٹوں فیکٹریوں اور دیگر کاروباری اداروں میں بھیج کرپیسہ نہ کمائیں تو پیٹ کی آگ کو کیسے بجھائیں گے ان کے بچے ناصرف اپنے غریب خاندان کی کفالت میں مدد گار ہوتے ہیں بلکہ کام کے ساتھ ہنربھی سیکھ رہے ہوتے ہیں اور بڑے ہونے تک پیسہ کمانے اور جینے کا ہنر سیکھ جاتے ہیںآپ کو معاشرے میں ایسے لوگ بھی ملیں گے جو اسی راستے سے گزر کر خوشحال زندگی گزار رہے ہیں جب کہ آپ کو ایسے گریجویٹ بھی ملیں گے جو نوکری کے لئے مارے مارے پھررہے ہوں گے یہ تحریر اس بات کی بھی غمازی کر ررہی ہے کہ چیک اور بیلنس کے فقدان یا مبینہ چشم پوشی کی وجہ سے حکومتی عملہ میں کچھ گندے انڈے بھی موجود ہیں جن کا محکمانہ خفیہ رپورٹ سے محاسبہ ضروری ہے۔ (زاہد رؤف کمبوہ غلہ منڈی گوجرہ، ٹوبہ ٹیک سنگھ)

مزید : رائے /اداریہ

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...