لوگ نواز شریف کے استقبال کے لئے باہر نکلیں ،پولیس اور انتظامیہ ظلم و زیادتی روک دے ،کارکنوں کو گرفتار کرنے والے 26 جولائی کو جیلوں میں ہوں گے:شہباز شریف

لوگ نواز شریف کے استقبال کے لئے باہر نکلیں ،پولیس اور انتظامیہ ظلم و زیادتی ...
لوگ نواز شریف کے استقبال کے لئے باہر نکلیں ،پولیس اور انتظامیہ ظلم و زیادتی روک دے ،کارکنوں کو گرفتار کرنے والے 26 جولائی کو جیلوں میں ہوں گے:شہباز شریف

  

لاہور(ڈیلی پاکستان آن لائن) مسلم لیگ نواز کے صدر میاں شہباز شریف نے نگران حکومت اور پولیس کو دھمکی دیتے ہوئے کہا ہے کہ ان کی پارٹی کے کارکنوں کو گرفتار کرنے والے 26 جولائی کو جیلوں میں ہوں گے،انتظامیہ اور پولیس کو واضح کہنا چاہتا ہوں کہ ظلم و زیادتی روک دیں،نواز شریف ملک بچانے آرہے ہیں، آج سب لوگ ان کے استقبال کیلئے باہر نکلیں۔

نجی ٹی وی کے مطابق بھٹہ چوک میں انتخابی جلسے سے خطاب کرتے ہوئے سابق وزیر اعلیٰ پنجاب شہباز شریف کا مسلم لیگی کارکنوں کی گرفتاریوں کے حوالے سے کہنا تھا کہ  پولیس نگران وزیراعلیٰ اور دیگر کی ہدایت پر ہمارے کارکنان کو گرفتار کر رہی ہے اور یہ گرفتاریاں انتخابات سے قبل دھاندلی ہے،وقت ایک جیسا نہیں رہتا، جب ہماری حکومت آئے گی تو آپ کے ساتھ زیادتی نہیں کریں گے بلکہ انصاف کے کٹہرے میں لے کر آئیں گے، مسلم لیگ (ن) کو دیوار سے لگایا جارہا ہے، ذمے دار کان کھول کر سن لیں، وقت ایک سا نہیں رہتا، گرفتاریوں اور تشدد سے ہمیں ڈرایا نہیں جا سکتا،جتنی دھاندلی کرلیں ہم 25 جولائی کا انتخاب جیت رہے ہیں۔شہباز شریف نے کہا کہ نوازشریف اہلیہ کی شدید بیماری کے باوجود پاکستان آرہے ہیں جن کا فقید المثال استقبال کیا جائے گا تاہم اس سے قبل راولپنڈی میں سیکڑوں افراد کو گرفتار کیا جا چکا ہے اور کارکنوں کو ایم پی او کے تحت بند کیا گیا، یہ سب الیکشن کو داغدار کرنے کے لیے کیا جا رہا ہے۔انہوں نے کہا کہ آج  کا پروگرام پرُامن ہے، اس کے باوجود کارروائیوں کا مطلب ہے دال میں کچھ تو کالا ہے جب کہ عمران خان لاہور میں جلسہ کر رہے ہیں اور ہمارے لیے دفعہ 144 نافذ ہے، پرامن طریقے سے نواز شریف کا استقبال کریں گے جب کہ کارکنوں کی گرفتاریاں الیکشن کی شفافیت پر سوال اٹھا رہی ہیں اور پارٹی صدر کی حیثیت سے کارکنوں کی گرفتاریوں پر خاموش نہیں بیٹھوں گا۔

مزید : قومی