400سے زائد کنٹینرزمختلف جگہوں پر ڈمپ

400سے زائد کنٹینرزمختلف جگہوں پر ڈمپ

لاہور(اسد اقبال)سابق وزیر اعظم میاں نواز شریف کی صاحبزادی سمیت وطن واپسی پر مسلم لیگی کارکنوں کو روکنے کے لیے نگران حکومت نے بھی معمول کی جمہوری حکومتوں جیسا رویہ اپنا لیا اور لاہور سمیت ملک کے دیگر شہروں سے آنے والے بڑے بڑے سینکڑوں کنٹینرز اور ٹرالوں کو زبر دستی روک کر بندوق کی نوک پرلاہور کے مختلف مقامات پر لے جا کر ڈمپ کر دیا گیا امن و امان کی صورتحال کو برقرار رکھنے کے لیے ٹرانسپورٹروں کو کرایہ دینا یا نہ دینا اپنی جگہ لیکن کروڑوں روپے کا مال سے لدھے کنٹینرز بحق سر کار ضبط کر کے مالکان کو کرب میں مبتلا کر دیا گیا ہے دوسری جانب کنٹینرز کو زبر دستی قبضے میں رکھنے سے جہاں ٹرانسپورٹروں کو کرایہ اور اخراجات کی مد میں لاکھوں روپے نقصا ن کا سامنا کرنا پڑتا ہے وہیں ملک میں امپورٹ ایکسپورٹ رکنے سے بین الاقوامی منڈیوں میں پاکستان کی جگ ہنسائی ہوگی اور ملکی معیشت پر منفی اثرات مرتب ہوتے ہیں جس پر پاکستان گڈز ٹرانسپورٹ ایسوسی ایشن( رجسٹرڈ ) نگران انتظامیہ کے خلاف سراپا احتجاج بن گئی اور انتباہ کیا ہے کہ اگر24گھنٹوں میں کنٹینرز اور ٹرالے بمعہ محفو ظ سامان واپس نہ کیے اور مناسب کرایہ ادا نہ کیا گیا تو ملک گیر پہیہ جام ہڑتال کی جائے گی ۔واضح رہے کہ آج ائیر پورٹ پر جانے والے سارے راستے سیل کر نے کے لیے لاہور سمیت پنجاب بھر کے شہروں کی پولیس افسران کو نگران حکومت کی ہدایات پر عملدرآمد کرنے کے لیے گزشتہ روز سے ہی کنٹینرز اور ٹرالوں کی زبر دستی پکڑ دھکڑ کی گئی اور شہر میں 400سے زائد کنٹینرز راستے روکنے کے لیے پکڑ لیے گئے ہیں بتایا گیا ہے کہ ڈرائیورز اور ٹرانسپورٹرز کی جانب سے مزاحمت پر پولیس اہلکاروں نے بندوق کی نوک پر سنگین نتائج کی دھمکیا ں دیتے ہوئے کنٹینرز سرکاری تحویل میں لیے جبکہ کئی ایک ڈرائیورز اور ہیلپرز کو تشدد کا نشانہ بھی بنایا ۔ پاکستان سے گفتگوکرتے ہوئے پاکستان گڈز ٹرانسپورٹ ایسوسی ایشن کے جنرل سیکرٹری نبیل محمود طارق نے کہا کہ نگران حکومت نے بھی غنڈہ گردی کرتے ہوئے منزلوں پر رواں دواں سینکڑوں کنٹینرزاور لوڈرہیوی گاڑیا ں پکڑ لی ہیں جبکہ اسلام آباد ، ملتان ، فیصل آباد ، گوجرانوالہ ، شیخوپورہ سمیت دیگر شہرو ں سے بھی اطلاعات موصول ہوئیں ہیں کہ زبردستی گاڑیاں پکڑی جارہی ہیں جس کی ہم بھرپور مذمت کرتے ہیں۔

مزید : صفحہ اول

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...