مسلم لیگ (ن) کا مبینہ ’’پری پول رگنگ ‘‘ کیخلاف عدالت جانے کا فیصلہ

مسلم لیگ (ن) کا مبینہ ’’پری پول رگنگ ‘‘ کیخلاف عدالت جانے کا فیصلہ

لاہور(سعید چودھری )پاکستان مسلم لیگ (ن) کی اعلیٰ قیادت نے اپنی لیگل ٹیم کومبینہ "پری پول رگنگ " کے خلاف سپریم کورٹ سے رجوع کرنے کے لئے آئینی درخواست تیا رکرنے کی ہدایت کردی ہے جبکہ نیب عدالت کی طرف سے سزاؤں کے خلاف اپیلیں میاں محمد نوازشریف اور ان کی صاحبزادی مریم نواز کی وطن واپسی کے بعد دائر کی جائیں گی ۔پاکستان مسلم لیگ (ن) نے 2018ء کے عام انتخابات میں انتظامیہ اور مختلف اداروں کی مبینہ مداخلت اورکارکنوں کی پکڑ دھکڑکو جواز بنا کر سپریم کورٹ میں آئینی درخواست دائر کرنے کا فیصلہ کیاہے ،ان دونوں معاملات پر پاکستان مسلم لیگ (ن) کی اعلیٰ قیادت اور ان کی قانونی ٹیم کے درمیان مشاورت مکمل ہوگئی ہے ،ذرائع کے مطابق اس معاملہ پر میاں محمد نوازشریف کو بھی اعتماد میں لیا گیا ہے ۔لیگی قیادت نے اپنی لیگل ٹیم کو قبل ازانتخابات دھاندلی روکنے کے لئے آئین کے آرٹیکل 184(3)کے تحت درخواست تیار کرنے کی ہدایت کردی ہے ،اس مشاورت میں شامل ایک اہم قانونی شخصیت نے روزنامہ پاکستان کو بتایا کہ حکومت اور بعض حکومتی اداروں کی طرف سے مسلم لیگ (ن) کوغیر قانونی طور پر نشانہ بنایا جارہا ہے ۔غیر قانونی مداخلت کے باعث شفاف اور آزادانہ انتخابات کا انعقاد ممکن نظر نہیں آرہا ،آئین کے تحت شفاف اور آزادانہ انتخابی عمل الیکشن کمشن کے ذمہ داری ہے جبکہ سپریم کورٹ آئینی حقوق کے تحفظ کی ضامن ہے ۔مسلم لیگ (ن) کے کارکنوں کو اندھا دھند گرفتار کیا جارہا ہے جس سے مسلم لیگ (ن) کے امیدواروں کے لئے انتخابی مہم چلانا مشکل ہوگیا ہے ۔انتخابی عمل میں مساوی مواقع کو یقینی بنانا الیکشن کمشن کی آئینی ذمہ داری ہے جسے پورا نہیں کیا جارہا۔مسلم لیگ (ن) پر مختلف قسم کے دباؤ ڈالے جارہے ہیں اور امن عامہ کے نام پر مختلف قدغنیں لگائی جارہی ہیں جو کہ آئین کے منافی ہیں ۔ذرائع کے مطابق مسلم لیگ (ن) کی قانونی ٹیم نے آئینی پٹیشن کی تیاری شروع کردی ہے ،صورتحال میں کوئی تبدیلی نہ ہوئی تو آئندہ چند روز میں یہ درخواست سپریم کورٹ میں دائر کردی جائے گی۔دوسری طرف نیب کی طرف سے میاں محمد نوازشریف ،مریم نواز اور کیپٹن (ر) محمد صفدر کو سنائی گئی سزاؤں کے خلاف اپیلیں مسلم لیگ (ن) کے قائدمیاں نوازشریف اور مریم نواز کی وطن واپسی کے بعد دائر کی جائیں گے ،یہ اپیلیں تیار ہیں تاہم انہیں فوری طور پر دائر کرنے کا معاملہ موخر کردیا گیا ہے جس سے یہ افواہیں بھی دم توڑ گئی ہیں کہ میاں نوازشریف اور مریم نواز کے لئے اسلام آباد ہائی کورٹ سے حفاظتی ضمانت مانگی جائے گی ۔ذرائع نے دعویٰ کیا ہے کہ یہ اپیلیں دونوں کے جیل جانے کے بعد دائر ہوں گی ۔ان اپیلوں میں احتساب عدالت کے فیصلے میں موجود مختلف قانونی خامیوں کو بنیاد بنایا گیا ہے ۔

عدالت جانے کا فیصلہ

مزید : صفحہ اول

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...