سب کو ڈیم کی تعمیر میں بڑھ چڑھ کرحصہ لینا ہوگا،غلام مصطفی

سب کو ڈیم کی تعمیر میں بڑھ چڑھ کرحصہ لینا ہوگا،غلام مصطفی

راولپنڈی (جنرل رپورٹر ) برابری پارٹی پاکستان کے حلقہ این اے 62سے قومی اسمبلی کے امید وار غلام مصطفی کھو کھر نے چیف جسٹس کی ہدایت پر ڈیمز کی تعمیر کیلئے قائم فنڈ میں پچاس ہزار روپے نقد عطیہ کرتے ہوئے کہا کہ پوری قوم کو ڈیمز تعمیرکیلئے فنڈز دینے میں بڑھ چڑھ کر حصہ لیناوقت کی اولین ضرورت ہے اس وقت ملک میں پانی کا بحران بڑھتا جا رہا ہے جس کے حل کیلئے قوم کے ہر فرد کو اپنا کردار ادا کرنا ہوگا الیکن جیت کر عوام کے مسائل ان کی دہلیز پر حل کرنے کیلئے تمام وسائل استعمال میں لائیں گے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے راولپنڈی پریس کلب میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ اس موقع پر انہوں نے نیشنل پریس کلب راولپنڈی کیمپ آفس کے انچارج عابد عباسی ، ممبر گورننگ باڈی چوہدری شوکت اور سابق ممبر گورننگ باڈی خالد چوہدری کی وساطت سے ڈیمز کی تعمیر کیلئے قائم سپریم کورٹ کے فنڈ میں جمع کرانے کیلئے پچاس ہزارر روپے نقد پیش کیئے۔ انہوں نے کہا کہ میں بھی ایک نومتوسط گھرانے سے تعلق رکھتا ہوں میرے پاس کوئی سواری نہیں ہے ایک رکشہ پر اپنی انتخابی مہم چلا رہا ہوں لوگوں کی طرف سے بہت تعاون ملا30 سالوں نے الیکشن جیتنے والوں نے عوام کو کچھ نہین دیا ہم منتخب ہو کر مسائل حل کرائیں گے۔ انہوں نے کہا کہ میں نے جو پیسے کمپین میں لگانے کیلئے مختص کئے تھے وہ قومی خزانے میں جمع کرانے کیلئے دے دیئے ہیں اپنی انتخابی مہم برو شر اور ہینڈ بل سے چلاؤں گا انہوں نے کہا کہ میرے مد مقابل امید وار نے چیف جسٹس جو سرکاری ڈیوٹی پر تھے، ان کے ساتھ مل کر اسے کمپین کا حصہ بنایا ہے اس کے خلاف میں الیکشن کمیشن کو درخواست دوں کے ضابطہ اخلاف کی خلاف ورزی پر انھیں نا اہل قرار دیا جائے۔ انہوں نے قوم سے اپیل کی کہ آنے والی نسلوں کے مستقبل کیلئے نئے ڈیمز وقت کی ضرورت ہیں قوم اس نیک کام میں بڑھ چڑھ کر حسہ لے تاکہ نسلوں کے مستقبل کو بچایا جا سکے۔ انہوں نے عوام سے اپیل کی وہ ارب پتی امید واروں کی بجائے پارٹی منشور کے مطابق اپنے جیسے غریب امید وار کو منتخب کریں تاکہ اسے ہمارے دکھ درد کا علم ہو اور وہ انھیں حل کرنے کی کوشش کرے۔

Back to Conversion Tool

 

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...