لیگی کارکن بے قابو، شہر شہر پولیس سے جھڑپیں اور پتھراو

لیگی کارکن بے قابو، شہر شہر پولیس سے جھڑپیں اور پتھراو
لیگی کارکن بے قابو، شہر شہر پولیس سے جھڑپیں اور پتھراو

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

لاہور(ڈیلی پاکستان آن لائن ) نواز شریف اور مریم نواز کے استقبال کیلئے آنے والے متوالوں کی کئی مقامات پر پولیس سے آنکھ مچولی، پتھراو اور شیلنگ، شاہدرہ راوی پل ،بھٹہ چوک، ٹھوکر نیاز بیگ اور بابو صابو انٹرچینج کے قریب متوالوں اور پولیس میں جھڑپیں ہوئیں جبکہ علاقہ میدان جنگ بنا رہا.

نجی ٹی وی چینل ”دنیا نیوز “ کے مطابق سابق وزیرِاعظم نواز شریف اور مریم نواز کے استقبال کیلئے آنے والے متوالوں کی کئی مقامات پر پولیس سے آنکھ مچولی، پتھراو اور شیلنگ، شاہدرہ راوی پل کے قریب متوالوں اور پولیس میں جھڑپیں ہوئیں، پتھراو کے جواب میں پولیس نے آنسو گیس کی شیلنگ کی،جس کے باعث علاقہ میدان جنگ بنا رہا، کئی گاڑیوں اور موٹر سائیکلوں کو بھی نقصان پہنچا۔ قافلے میں شامل گاڑی کے ساتھ لٹکا کارکن تیز رفتاری کے باعث گر گیا تاہم خوش قسمتی سے محفوظ رہا،لاہور میں پرجوش کارکنوں نے ریگل چوک پر لگایا گیا کنٹینر ہٹا کر سڑک کھول دیا اور پولیس کی گاڑی پر چڑھ کر نعرہ بازی بھی کرتے رہے، سکیم موڑ پر مشتعل کارکنوں نے پولیس کی گاڑی توڑ ڈالی، بھٹہ چوک، ٹھوکر نیاز بیگ اور بابو صابو انٹرچینج پر بھی تصادم ہوا۔گجرات میں چناب پل پر بھی پولیس اور متوالے آمنے سامنے آ گئے، قافلہ روکنے پر لیگی کارکنوں نے پتھراو شروع کر دیا جس سے ایک اہلکار زخمی ہو گیا۔ پولیس نے مظاہرین کو منتشر کرنے کیلئے آنسو گیس کی شیلنگ کی۔فیصل آباد سے آنے والے عابد شیر علی کے قافلے کو شیخوپورہ میں پولیس نے روک لیا۔ لیگی کارکنوں اور پولیس میں ہاتھا پائی ہوئی جس کے بعد پولیس نے لاٹھی چارج بھی کیا،ساہیوال میں بھی پولیس اور متوالے بھڑ گئے، ہاتھا پائی اور لاٹھی چارج کے دوان سابق ایم این اے طفیل جٹ کا سر پھٹ گیا۔

مزید : قومی