کوٹ ادو: سرکاری ہسپتالوں میں ادویات سپلائی، بندغریب مریضوں کا نیاامتحان

کوٹ ادو: سرکاری ہسپتالوں میں ادویات سپلائی، بندغریب مریضوں کا نیاامتحان

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

کوٹ ادو(تحصیل رپورٹر) محکمہ صحت کی جانب سے ہسپتالوں میں مفت ادویات کے دعوے باتوں تک ہی محدود ہو کر رہ گئے ہیں،چند روز قبل تحصیل ہیڈ کوارٹر ہسپتال میں ادویات نہ ہونے کی خبریں شائع ہوئی تھیں جن پر سیکرٹری ہیلتھ نے نوٹس لیتے ہوئے ایک ہفتہ میں ادویات کی قلت کو دور کرنے (بقیہ نمبر16صفحہ12پر)

کا کہا تھا تاہم 2ہفتے گزر جانے کے با وجود سیکرٹری ہیلتھ کا وعدہ ایفا نہ ہوا،اس وقت تحصیل کوٹ ادو کے بڑے سرکاری تحصیل ہیڈ کوارٹر ہسپتال سمیت ملحقہ قصبات چوک سرور شہید،دائرہ دین پناہ،سنانواں،گجرات کی ہسپتالوں کی ایمرجنسی، انڈور و آوٹ ڈور میں ادویات نایاب ہیں،صرف ایمرجنسیز میں آنے والے مریضوں کو چند ادویات مفت فراہم کی جا رہی ہیں جبکہ مہنگی اور انتہائی اہم ادویات مریضوں کو باہر سے لانی پڑ رہی ہیں جس سے ہسپتالوں میں آئے غریب مریضوں کو شدید مشکلات کا سامنا ہے،ضلع مظفرگڑھ کی سب سے بڑی تحصیل کاتحصیل ہیڈ کوارٹر ہسپتال کے اکثر شعبہ جات میں اپریشن تھیٹر،آئی شعبہ،گائنی شعبہ ودیگر اہم شعبوں میں ادویات نایاب ہو گئی ہیں جبکہ کتے کاٹنے کی ویکسین سمیت شوگر کے مریضوں کیلئے انسولین بھی غائب ہو گئی ہے،مریضوں اور ان کے لواحقین نے کہا کہ پنجاب گورنمنٹ کی جانب سے فری ادویات کے دعوے کئے جاتے ہیں لیکن ہسپتالوں کی ایمرجنسی میں صرف چند سستی ادویات ہی میسر ہیں جبکہ مہنگی اور جان بچانے والی تمام ادویات بازار سے لانے کیلئے کہہ دیا جاتا ہے،ہسپتال کے انڈور میں داخل مریضوں کو ادویات کے حصول کیلئے پہلے در بدر کی ٹھوکریں کھانا پڑتی ہیں پھر کہیں جا کر پر چی پر لکھی ادویات میں سے آدھی مل جاتی ہیں اور آدھی بازار سے خریدنی پڑتی ہیں جبکہ آؤٹ ڈور مریضوں کو تمام ادویات ہی بازار سے خریدنا پڑتی ہیں،دوسری طرف سرکاری ہسپتال کی مہنگی ادویات ڈاکٹرز اپنے کلینکوں پر لے جاتے ہیں،مریضوں اور ان کے لواحقین نے پنجاب گورنمنٹ سے مطالبہ کیا ہے کہ ہسپتالوں میں مفت ادویات کے وعدوں کو پورا کیا جائے تاکہ غریب مریض حکومت کے مفت علاج معالجہ سے مستفید ہو سکیں۔
نیا امتحان