مولانا فضل الرحمان بھی نیب کے ریڈار پر، بڑی خبرآگئی

مولانا فضل الرحمان بھی نیب کے ریڈار پر، بڑی خبرآگئی
مولانا فضل الرحمان بھی نیب کے ریڈار پر، بڑی خبرآگئی

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

پشاور (آن لا ئن،آئی این پی ) قومی احتساب بیو رو ( نیب) نے جمعیت علمائے اسلام (ف)کے مرکزی امیر مولانا فضل الرحمن کے خلاف آمدن سے زائد اثاثوں کی تحقیقات کی منظوری دےدی ۔ تفصیلا ت کے مطابق نیب مولانا فضل الرحمن کے آمدن سے زائد اثاثوں کی چھان بین کرے گی، مولانا فضل الرحمان کشمیر کمیٹی کے چیئرمین رہ چکے ہیں جبکہ اپوزیشن لیڈر سمیت ایم ایم اے کے سربراہ بھی رہے ہیں ۔دوسری طرف جمعیت علماء اسلام (ف) کے سربراہ مولانا فضل الرحمن نے کہا ہے کہ ہم نیب کو تسلیم نہیں کرتے،نیب کو استعمال کیا جا رہا ہے، اگرکوئی نیب نوٹس بھیجنا چاہتا ہے تو بھیج دے،20 سال سے میری جائیداد کی کھوج لگائی جا رہی ہے، لیکن ان کو میرے خلاف کچھ بھی نہیں ملا ۔ پشاور میں میڈیا سے گفتگو کر تے ہوئے فضل الرحمن نے کہا کہ اس وقت ہم بدترین غلامی کا شکار ہیں ۔ پاکستان کا بجٹ آئی ایم ایف نے بنایا اور اس کی ٹیم کو ہم پر مسلط کردیا گیا ہے ۔ بدترین حکومت نے عوام پر مہنگائی مسلط کردی ہے ۔ عوام کا جینا مشکل کردیا گیا ہے ۔ حکومت ڈاکومنٹیشن کے نام پر عوام کی جیبوں تک رسائی چاہتی ہے ۔ آج میڈیا پر پابندی لگائی جا رہی ہے اور اینکرچیخ رہے ہیں ۔ عوام کی چیخ وپکار آسمان کو چھو رہی ہیں ۔ ملک کا ہر طبقہ تاجر ، دکاندار چیخ رہے ہیں ۔ مغرب کا معاشی نظریہ اور فلسفہ مسلط کیا گیا ہے ۔ امریکہ اور یورپ کو بتانا چاہتے ہیں کہ اس حکومت کی پشت پناہی چھوڑ دے ۔ مولانا فضل الرحمن نے کہا کہ اکثریت چاہتی ہے کہ چیئرمین سینیٹ تبدیل کیا جائے، لیکن اقلیت کو کیا حق پہنچتا ہے کہ ڈپٹی چیئرمین کیخلاف تحریک عدم اعتماد لائے۔ انہوں نے کہا کہ ہم اس نیب کو تسلیم نہیں کرتے ۔ اس نیب کو استعمال کیا جا رہا ہے ۔ اگرکوئی نیب نوٹس بھیجنا چاہتا ہے تو بھیج دے ۔ 20 سال سے میری جائیداد کی کھوج لگائی جا رہی ہے،لیکن ان کو میرے خلاف کچھ بھی نہیں ملا ۔ انہوں نے کاکہاہے کہ حکومت کے خلاف ملین مارچ تاریخی ہوگا ، بدترین حکومت نے عوام پر مہنگائی مسلط کردی ہے ، ملک کا بجٹ آئی ایم ایف نے بنایا ہے ۔