معاملہ صرف ارشد ملک کا نہیں سپریم کورٹ کے سینئر جج بھی موجود تھے: شاہد خاقان عباسی

معاملہ صرف ارشد ملک کا نہیں سپریم کورٹ کے سینئر جج بھی موجود تھے: شاہد خاقان ...
معاملہ صرف ارشد ملک کا نہیں سپریم کورٹ کے سینئر جج بھی موجود تھے: شاہد خاقان عباسی

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن)پاکستان مسلم لیگ ن کے سینئر نائب صدر اور سابق وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی کا کہنا ہے کہ عوام کا انصاف پر اعتماد چاہتے ہیں، ہمارا مقصد کوئی سیاسی مفاد حاصل کرنا نہیں ہے، ہماری اعلی عدلیہ سے درخواست ہے کہ وہ ویڈیو سکینڈل کے معاملے پر نوٹس لے کیونکہ معاملہ صرف ارشد ملک کا نہیں بلکہ سپریم کورٹ کے سینئر جج بھی موجود تھے۔
اسلام آباد میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے شاہد خاقان عباسی کا کہنا تھا کہاحتساب کاسارا نظام شکوک و شبہات کا شکار ہو چکا ہے، معاملہ صرف ایک جج کا نہیں بلکہ مانیٹرنگ کرنے والے معزز جج صاحبان کا بھی ہے، دباؤ کا اعتراف کیا  گیا تو پھر اس پر ایکشن کیوں نہیں لیا گیا، پولیس میں اطلاع کیوں نہیں دی گئی؟ اس کیس کو مد نظر رکھتے ہوئے صر ف یہی کیس نہیں بلکہ تمام تر کیسز مشکوک ہو چکے ہیں،40 منٹ کی ویڈیو پیش کردی ہے اس کے بعد مزید کسی ثبوت کی ضرورت نہیں ہے، آج لوگ انصاف کے نظام پر سوال اٹھا رہے ہیں۔انہوں نے کہا کہپریس ریلیز اوربیان حلفی   سے واضح ہے کہ  اپنے آپ کو بچانے کیلئے کہانیاں بنا ئی جارہی ہیں،عوام جانتے ہیں کہ سچ کیا ہے؟ جو فیصلے ہو گئے ان کا فیصلہ اب تاریخ ہی کرے گی،مانیٹرنگ جج کو پریشرسے آگاہ کیوں نہیں کیا گیا تھا؟ان کو ہٹانے کا مطلب دال میں کچھ کالا ہے،کسی کو کچھ کہنے کی ضرورت نہیں، سب کچھ سامنے آ گیا، جو لوگ دباؤ میں ملوث ہیں ان کوسزا دینے کی ضرورت ہے، ہم عدلیہ کا مکمل احترام کرتے ہیں، جوشخص متاثر ہوا وہ آج جیل میں ہے، پیٹشن کی ضرورت نہیں سپریم کورٹ نوٹس لے سکتی ہے،ہماری گزارش ہے اعلی عدلیہ اس معاملے کا نوٹس لے،عدالتوں کا احترام کرتے ہیں کسی کیخلاف کوئی بات نہیں کی، چاہتے ہیں کہ عوام کا عدلیہ پر اعتماد بحال ہو، ہم نے کبھی کسی کو بلیک میل نہیں کیا،ہمیشہ حق کی بات کی جس میں ہمت ہے مقدمہ بنالے،میں ہر مقدمے میں حاضر ہونے کو تیار ہوں۔

شاہد خاقان عباسی کا کہنا تھا کہ حکومت سیاسی جماعتوں پردباؤڈال رہی ہے، حکومت ملکی معاملات پرسنجیدگی کامظاہرہ کرے، یہ ایک سنجیدہ مسئلہ ہے، ہمارا مقصد کسی کی ہتک نہیں بہت سارے شواہد موجود ہیں، شواہد کے بعد انصاف کا نظام مزید متاثر ہو گا، ہم انصاف کے نظام پر پاکستان کے عوام کا اعتماد چاہتے ہیں، پہلے وزرا ویڈیو ٹیپ کا دفاع کرتے رہے،آج حکومت نے دوسرا یوٹرن لیا ہے،وزیراعظم عمران خان نے کہا حکومت کا تعلق نہیں جوڈیشری جانے،جج کو ہٹانے پر اب حکومت دفاع کر رہی ہے،حکومت نے انصاف پر گہرا وار کیا ہے۔

مزید :

قومی -