نیب کو دلیری سے کام لیتے ہوئے سب کے خلاف تحقیقات کرنی چاہئیں : صدر مملکت

نیب کو دلیری سے کام لیتے ہوئے سب کے خلاف تحقیقات کرنی چاہئیں : صدر مملکت
نیب کو دلیری سے کام لیتے ہوئے سب کے خلاف تحقیقات کرنی چاہئیں : صدر مملکت

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن) صدر مملکت عارف علوی کاکہنا ہے کہ جج ارشد ملک ویڈیو سکینڈل کی تحقیقات عدلیہ کو کرنی چاہئیں، چیئرمین سینیٹ کے انتخابات پر ان کا کوئی موقف نہیں ہے کیونکہ وہ صدر ہیں اور ان کی کوئی جماعت نہیں ہے، نیب کو سب کے خلاف تحقیقات کرنی چاہئیں اور دلیری سے کام لینا چاہیے۔
نجی ٹی وی جی این این کو دیے گئے انٹرویو میں صدر مملکت عارف علوی نے کہا کہ ماضی میں تو دباﺅ ہوتا تھا لیکن اب نہیں سمجھتا کہ دباﺅ ہونا چاہیے ، اداروں پر مکمل اعتماد ہے اور امید ہے کہ ادارے اپنے فرائض خوش اسلوبی سے انجام دیں گے۔ ویڈیو کے معاملے کی تحقیقات ضرور ہونی چاہئیں اور یہ تحقیقات عدلیہ کو کرنی چاہئیں۔
چیئرمین سینیٹ کی تبدیلی کے حوالے سے صدر مملکت نے کہا کہ جمہوریت میں سیاسی رسہ کشی ہوتی ہے سینیٹ انتخابات پر میرا کوئی موقف نہیں ہے کیونکہ میں صدر ہوں اور میری کوئی جماعت نہیں ہے۔
انہوں نے کہا کہ اگر کسی جگہ کرپشن ہورہی ہے تو حکومت اپنی آنکھیں بند نہیں رکھ سکتی حکومتوں کے کرپشن ختم کرنے کے اچھے مقاصد ہوتے ہیں، جب تک سب کے ساتھ مساوی سلوک نہیں ہوگا پاکستان آگے نہیں بڑھ سکتا، نیب آج کل پرانے مقدمات دیکھ رہا ہے، نیب کو سب کے خلاف تحقیقات کرنی چاہئیں اور دلیری سے کام لینا چاہیے، چیئرمین نیب سے ملاقات میں کہا کہ آپ خود مختار ہیں اگر سپورٹ کی ضرورت ہوئی تو دوں گا۔

مزید :

قومی -