ایکسیئن پیسکو (کنسٹرکشن) کا حالیہ ٹینڈرز میں اختیارات کا ناجائزاستعمال

  ایکسیئن پیسکو (کنسٹرکشن) کا حالیہ ٹینڈرز میں اختیارات کا ناجائزاستعمال

  

نوشہرہ (بیورورپورٹ) ایکسین پیسکو کنسٹرکشن مردان نے حالیہ ٹینڈرز میں اپنے اختیارات سے تجاوز کر دیا۔ ایکسین کے اختیارات تجاوز کو واپڈا کنٹریکٹر ز نے یکسر مسترد کر تے ہوئے اسے وسیع پیمانے پر مالی بد عنوانی اور لوٹ مار قراد دیتے ہوئے منظور افراد کو نوازنے اور حق داروں کی حق تلفی کے خلاف سراپا احتجاج بن گئے۔ اور چیف ایگزیکٹو پیسکو سے مردان پیسکو کنسٹرکشن کے 22 جولائی کو ہونے والے ٹینڈر ز اوپنگ کو منسوح کر نے کا مطالبہ کر دیا بصور ت دیگر ٹینڈر اوپنگ کے وقت پیسکو کنسٹرکشن مردان ڈویژن کے دفتر کے سامنے مظاہرے اپنے پی ای سی اسناد احتجاجاًجلانے کی دھمکی دے دیں۔ اس سلسلے میں آل پاکستان واپڈا کنٹریکٹرز ایسو سی یشن کے رہنماؤں حاجی لعل ذادہ خان، جو ہر اینڈ کو جوہر، بلال خان اینڈ کو کے جمال خان، وھاب گل، حمزہ برادرز کے ایم ڈی صحبت خان نے مردان پیسکو کنسٹرکشن کے ایکسین پر الزام عائد کر تے ہوئے کہا کہ گزشتہ روز ایکسین پیسکو کنسٹرکشن مردان ڈویژن نے ایک ٹینڈر نوٹس کے ذریعے بجلی کے 51 ترقیاتی منصوبوں کے لیے پیشکش طلب کی ہے۔ جن میں 12 بارہ منصوبے 50 لاکھ روپے ایک منصوبہ 40 لاکھ اور ایک منصوبہ 66لاکھ روپے کا ہیں۔ جو کہ ایکسین کے دائرہ اختیار میں نہیں ایکسین 20 لاکھ روپے سے ذائد لاگت تخمینہ کا منصوبہ دستخط نہیں کر سکتا۔ ان نے کہا کہ پیسکو کنسٹرکشن مردان پراجیکٹ ڈائریکٹر پیسکو کنسٹرکشن، پراجیکٹ ڈائریکٹر جی ایس سی (پیسکو) کے دفاتر کرپشن بد عنوانی لوٹ مار اور اقربا پروری کے گڑھ بن چکے ہیں۔ کوئی پرسان حال نہیں تبدیلی کی دعویدار حکومت کا پُتر وفاقی وزیر پانی و بجلی عمر ایوب بھی بہتی گنگا میں ہاتھ دھو کر اس تمام کرپشن اور تمام کرپٹ عناصر پر آنکھیں بند کر کے خاموش تماشائی بیٹھ ہو ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ اگر 22 جولائی 2020 کو منقعد ہونے والے ٹینڈرز اوپنگ کو منسوح نہ کیا گیا۔ تو ہم واپڈا کنٹریکٹر ز ملک گیر احتجاج شروع کر کے اسی روز پیسکو کنسٹرکشن مردان ڈویژن کے دفتر کے سامنے اپنے پی ای سی اسناد جلاکر جلا ئینگے جس کی تمام تر ذمہ داری ایکسین پیسکو کنسٹرکشن مردان ڈویژن اور چیف ایگزیکٹو پر عائد ہوگی۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -