میٹروپولیٹن کارپوریشن، شہر میں غیرقانونی تعمیرات کا سلسلہ تیز

        میٹروپولیٹن کارپوریشن، شہر میں غیرقانونی تعمیرات کا سلسلہ تیز

  

ملتان (سپیشل رپورٹر)میٹروپولیٹن کارپوریشن کے شعبہ بلڈنگ برانچ کی ملی بھگت سے شہر بھر میں غیر قانونی کمرشل تعمیرات کا سلسلہ عروج پر پہنچ گیا ہے ہے بلڈنگ(بقیہ نمبر10صفحہ6پر)

انسپکٹر نے غیر قانونی گھریلو،کمرشل تعمیرات کے منہ مانگے ریٹ مقرر کر دیے ہیں نقشہ فیسوں کمرشلائزیشن کی مد میں بھی سرکاری خزانے کو کروڑوں روپے کا نقصان پہنچایا جا رہا ہے جبکہ بے ہنگم تعمیرات سے نہ صرف ٹریفک بلکہ پارکنگ کے مسائل بھی شدت اختیار کر گئے ہیں ذرائع کے مطابق کرونا وائرس کی وجہ سے جہاں دنیا بھر میں خوف و ہراس پھیلا ہوا ہے پاکستان سمیت دنیا کے تمام ممالک میں لاکھوں افراد موت کے منہ میں چلے گئے ہیں جنوبی پنجاب کے سب سے بڑے شہر ملتان کی میٹرو پولیٹن کارپوریشن کی بلڈنگ برانچ نے کہا قواعد و ضوابط کی دھجیاں بکھیر دی ہیں اور گزشتہ چار ماہ سے کورونا وائرس کی وجہ سے جاری لاک ڈاؤن کے دوران میٹروپولیٹن کارپوریشن کے بلڈنگ انسپکٹرز کی چاندی ہوگئی ہے اور انہوں نے غیر قانونی بے ہنگم تعمیرات کا کاروبار عروج پر پہنچا کر کر بلڈنگ بائی لاز کی دھجیاں بکھیر دی ہیں بتایا گیا ہے کہ جب سے جنوبی پنجاب صوبے کے حوالے سے سیکریٹریٹ کی پیش رفت ہوئی ہے بلڈنگ انسپکٹر نے غیر قانونی تعمیرات کی سرپرستی کے ریٹ میں بھی اضافہ کر دیا ہے نقشبند کالونی کے عقب میں احمد آباد کے کم چوڑائی والے روڈ پر سعید اللہ نامی شخص نے کمرشل مارکیٹ کی تعمیر کا سلسلہ شروع کر رکھا ہے بلڈنگ انسپکٹر کے ساتھ مکا کے باعث نہ تو ہائی لیول ڈیزائن کمیٹی سے سے ڈبل سٹوری مارکیٹ کا نقشہ منظور کروایا گیا ہے اور نہ ہی سیٹ بیک،پارکنگ کے لیے جگہ چھوڑی گئی ہے جبکہ فیسوں کی مد میں بھی سرکاری خزانے کو لاکھوں روپے کا نقصان پہنچا ہے اہل علاقہ نے کمشنر ملتان ڈویژن، اور چیف آفیسر میٹروپولیٹن کارپوریشن سے فوری کاروائی کا مطالبہ کیا ہے۔

تیز

مزید :

ملتان صفحہ آخر -