” خاتون اول بشریٰ بی بی کا بڑا بیٹا ابراہیم مانیکا ٹھیکیداروں کے بزنس پارٹنر بن کر کروڑوں روپے کے ٹھیکے لے رہے ہیں اور ۔۔“ سینئر صحافی نے بڑا دعویٰ کر دیا

” خاتون اول بشریٰ بی بی کا بڑا بیٹا ابراہیم مانیکا ٹھیکیداروں کے بزنس پارٹنر ...
” خاتون اول بشریٰ بی بی کا بڑا بیٹا ابراہیم مانیکا ٹھیکیداروں کے بزنس پارٹنر بن کر کروڑوں روپے کے ٹھیکے لے رہے ہیں اور ۔۔“ سینئر صحافی نے بڑا دعویٰ کر دیا

  

لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن )سینئر صحافی احمد نورانی نے خاتون اول بشریٰ بی بی کے بڑ ے بیٹے ابراہیم مانیکا کے حوالے سے بڑا دعویٰ کر دیاہے جس نے انٹر نیٹ پر ہنگامہ برپا کر دیاہے ۔

تفصیلات کے مطابق سینئر صحافی احمد نورانی نے ٹویٹر پر پیغام جاری کرتے ہوئے لکھا کہ ”اور اب ابراہیم "مانیکا" بھی فیڈرل گورنمنٹ ایمپلائز ہاﺅسنگ فاﺅنڈیشن اور ایل ڈی اے سے منسلک دو مختلف ٹھیکیداروں کے بزنس پارٹنربن کرکروڑوں کے ٹھیکے لے رہے ہیں، مگرکیاکیجیے ایسی خبریں دینے سے خاتونِ اوّل کی توہین ہوتی ہے اورقتل کی دھمکیاں ملنابھی شروع ہوجاتی ہیں۔“

یاد رہے کہ اس سے قبل ابراہیم مانیکا پر مبینہ اغواءکا الزام بھی عائد کیا گیا تھا لیکن ان کے خلاف عدالت نے یہ درخواست مسترد کر دی تھی ۔

درخواست گزار نے عدالت میں موقف اختیار کیا تھا کہ پولیس نے اس کے ایک بھائی اعجاز احمد پراپرٹی ڈیلر کو 11 دسمبر 2019ءجبکہ دوسرے بھائی احمد حسن کو 3 فروری کو گھر سے اٹھایا۔ درخواست گزار کا کہناتھا کہ ابراہیم مانیکا نے انہیں 10 لاکھ روپے سرمایہ کاری کیلئے دیئے تھے۔ سرمایہ کاری کی رقم سے خریدی گئی جائیداد ابھی بِکی نہیں تھی کہ ابراہیم مانیکا نے رقم کی واپسی کا تقاضا شروع کر دیا۔

ابراہیم مانیکا کے والد نے رقم لینے کیلئے ایک ڈالے پر بندے بھیجے، مگر وہ ڈالا الٹ گیا، ابراہیم مانیکا کو ڈالا مرمت کرا کر دیا اور ایک گاڑی کرائے پر لے کر بھی دی۔درخواست گزار نے بتایا کہ ابراہیم مانیکا کو عدالتی نوٹس ملا تو میرے بھائیوں کے ٹکڑے ملنے کی دھمکیاں دی گئیں، ابراہیم مانیکا کو 10 لاکھ روپے دے چکے ہیں، وہ اب مزید ڈیڑھ کروڑ روپے کا تقاضا کر رہا ہے۔ عدالت نے یہ درخواست مبینہ مغویوں کے خلاف امانت میں خیانت کا مقدمہ درج ہونے کی بنیاد پر خارج کر دی تھی ۔

مزید :

قومی -