شاہ صاحب!الیکٹرانک کرائم تو اسی طرح ہوتا ہے،جسٹس اعجاز الاحسن کا وکیل درخواست سے مکالمہ، 6 ارب کی منی لانڈرنگ میں ملوث ملزم کی درخواست ضمانت خارج

شاہ صاحب!الیکٹرانک کرائم تو اسی طرح ہوتا ہے،جسٹس اعجاز الاحسن کا وکیل ...
شاہ صاحب!الیکٹرانک کرائم تو اسی طرح ہوتا ہے،جسٹس اعجاز الاحسن کا وکیل درخواست سے مکالمہ، 6 ارب کی منی لانڈرنگ میں ملوث ملزم کی درخواست ضمانت خارج

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)سپریم کورٹ نے 6 ارب روپے کی مبینہ منی لانڈرنگ میں ملوث ملزم کی درخواست ضمانت خارج کردی اورملزم کو مکمل دستاویزات کے ساتھ دوبارہ ٹرائل کورٹ سے رجوع کرنے کی ہدایت کردی۔جسٹس اعجاز الاحسن نے وکیل سے مکالمہ کرتے ہوئے کہاکہ شاہ صاحب!الیکٹرانک کرائم تو اسی طرح ہوتا ہے۔

تفصیلات کے مطابق سپریم کورٹ میں منی لانڈرنگ میں ملوث ملزم کی درخواست ضمانت پر سماعت ہوئی،چیف جسٹس گلزاراحمد کی سربراہی میں بنچ نے سماعت کی،جسٹس اعجاز الاحسن نے استفسار کیا کہ اتنی بڑی ٹرانزیکشن ہوتی رہی ان کا کاروبار کیا تھا؟،وکیل ملزم نے کہاکہ نریش کمارچاول کے کاروبار سے منسلک ہیں،جسٹس اعجاز الاحسن نے کہاکہ 6 ارب سے زیادہ کی ٹرانزیکشن ہے خریداری کاکوئی ریکارڈ نہیں ۔

وکیل ملزم نے کہاکہ نریش کمار2012 سے یہی کام کررہے تھے اور اپنا کمیشن لیتے تھے ،جسٹس اعجاز الاحسن نے استفسار کیا کہ اگرایسا ہے تو آپ کے پاس خریداری ،فروخت کرنے کے دستاویزات کیوں نہیں ؟۔وکیل نے کہاکہ 2012 سے 2020 تک چاول کی خریداری کیلئے پیسے آتے رہے ،ایف آئی اے نے کارروائی کی ،جسٹس اعجاز الاحسن نے کہاکہ کہاجاتا ہے یہ سارے جعلی اکاﺅنٹس ہیں ؟۔

جسٹس اعجاز الاحسن نے وکیل سے مکالمہ کرتے ہوئے کہاکہ شاہ صاحب!الیکٹرانک کرائم تو اسی طرح ہوتا ہے،ٹرائل کی کیا صورتحال ہے؟3 ماہ کاکہاگیاتھا،ڈپٹی اٹارنی جنرل میاں اصغر علی نے کہاکہ چارج فریم نہیں ہوا،بس آج کل میں ہوناوالا ہے ،چیف جسٹس گلزاراحمد نے کہاکہ آپ کے اکاﺅنٹ سے جتنی ٹرانزیکشن ہوئی ایک ہی اکاﺅنٹ سے ہے ۔

وکیل ملزم قلب حسن نے کہاکہ سندھ میں چاول کاساراکاروبار ہندوکمیونٹی کے پاس ہے ،چیف جسٹس پاکستان نے کہاکہ کوئی ایک دستاویزدکھا دیں آپ کا چاول کاکاروبار ہے؟،ڈپٹی اٹارنی جنرل نے کہاکہ ملزم اپنے کاروبا ر سے متعلق کہیں بھی ایک دستاویز نہیں دے سکا،اتنی بڑی ٹرانزیکشن کاثبوت ہی نہیں کس سے خریداکس کو فروخت کیا،عدالت نے 6 ارب روپے کی مبینہ منی لانڈرنگ میں ملوث ملزم کی درخواست ضمانت خارج کردی اورملزم کو مکمل دستاویزات کے ساتھ دوبارہ ٹرائل کورٹ سے رجوع کرنے کی ہدایت کردی۔

مزید :

قومی -علاقائی -اسلام آباد -