14 سالہ طالبہ کی خود کشی، سکول نے 9 روز تک لاش چھپائے رکھنے کے بعد خاموشی سے اسے جلا دیا

14 سالہ طالبہ کی خود کشی، سکول نے 9 روز تک لاش چھپائے رکھنے کے بعد خاموشی سے اسے ...
14 سالہ طالبہ کی خود کشی، سکول نے 9 روز تک لاش چھپائے رکھنے کے بعد خاموشی سے اسے جلا دیا

  

نئی دہلی(مانیٹرنگ ڈیسک) بھارت میں ایک بورڈنگ سکول کی طالبہ نے چھت کے پنکھے سے لٹک کر خودکشی کر لی جس پر سکول کی انتظامیہ نے والدین کو اطلاع دینے کی بجائے ایسا کام کر ڈالا کہ ماں باپ بچی کا منہ بھی نہ دیکھ پائے۔ ٹائمز آف انڈیا کے مطابق یہ 14سالہ بچی 10ویں کلاس کی طالبہ تھی جس کا تعلق بھارتی ریاست ہریانہ سے تھا۔ اسے ایک سال قبل ماں باپ نے اتر پردیش کے شہر نوئیڈا کے اس بورڈنگ سکول میں داخل کروایا تھا جہاں اس نے مبینہ طور پر پھندہ لے کر خودکشی کر لی۔

رپورٹ کے مطابق سکول انتظامیہ نے طالبہ کے والدین اور پولیس کو اطلاع دینے کی بجائے اس کی خودکشی کی خبر چھپا لی اور خود ہی خفیہ طریقے سے لڑکی کی چتا جلا دی۔ جب والدین کو علم ہوا تو انہوں نے الزام عائد کر دیا کہ ان کی بیٹی نے خودکشی نہیں کی۔ اسے لڑکیوں کے ایک گروپ نے کلاس روم کے پنکھے کے ساتھ پھانسی دے کر قتل کیا۔ تاہم والدین نے جب بچی کا بیگ کھولا تو اس میں سے کئی پرچیاں برآمد ہوئیں جن سے خودکشی کا اشارہ ملتا تھا۔

ان پرچیوں پر لڑکی نے لکھ رکھا تھا کہ”مجھے اپنی زندگی سے نفرت ہے کیونکہ میری کوئی بھی دوست نہیں ہے۔ کوئی بھی مجھ سے دوستی نہیں کرتی۔ “ ایک پرچی پر اس نے لکھا تھا کہ ”میں ہی غلط ہوں، کیونکہ باقی سب مجھ سے دور رہتے ہیں۔“ان پرچیوں پر اس نے دوسرے طالب علموں کے ناروا سلوک کے بارے میں بھی لکھ رکھا تھا۔ اس لڑکی کی ایک 13سالہ بہن بھی اسی سکول میں پڑھتی تھی اور والدین کا کہنا ہے کہ سکول انتظامیہ نے ان کی دوسری بیٹی کو کمرے میں لاک کر دیا تھا تاکہ اسے اپنی بہن کی خودکشی کا علم نہ ہو اور وہ والدین کو نہ بتا دے۔لڑکی کے والدین نے پولیس کو ایف آئی آر درج کروا لی ہے جو اس افسوسناک واقعے کی تفتیش کر رہی ہے۔

مزید :

بین الاقوامی -