توانائی بحران کی وجہ سے برآمدات بری طرح متاثر ہورہی ہیں

توانائی بحران کی وجہ سے برآمدات بری طرح متاثر ہورہی ہیں

راولپنڈی(کامرس ڈیسک )راولپنڈی چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کی قائمہ کمیٹی برائے ایکسپورٹ ٹریڈ کے چیئر مین سید اسد حیدر مشہدی نے کہا ہے کہ توانائی بحران اور امن وامان کی خراب صورتحال نے جہاں بین الاقوامی سطح پر پاکستان کامنفی تاثر پیدا کیا ہے وہاں ملک کی برآمدات بھی بُری طرح متاثر ہوئی ہیں ،اگرغیر راویتی تجارتی منڈیوں اور اشیاءکی برآمد پر توجہ دی جائے اور بیرون ممالک تعینات پاکستانی کمرشل قونصلرز کو فعال کیا جائے تو برآمدات کے حجم کو 35ارب ڈالر تک بڑھایا جا سکتا ہے۔ ان خیالات کا اظہار انہوںنے کمیٹی کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ اس موقع پر صدر چیمبر ڈاکٹر شمائل داﺅد آرائیں،کمیٹی کے نائب چیئرمین نعمان خان ، سینئر نائب صدر ملک شاہد سلیم ،نائب صدر محمد عالم چغتائی اور دیگر اراکین کمیٹی بھی موجود تھے۔ اسد مشہدی نے کہاکہ برآمدات میں اضافے کے بغیر کوئی ملک ترقی نہیں کر سکتا ملکی خزانے کی تقویت کے لیے تجارتی خسارے کو کم سے کم سطح پر لایا جائے تاکہ قیمتی زرمبادلہ کی بچت ہو سکے۔ انہوںنے کہا کہ چیمبر ہر سال دنیا بھر میں مختلف قسم کی نمائشوں کا انعقاد کرتا رہتا ہے اور چیمبر کے مستقبل کے منصوبوں میں وسطی ایشیائی ریاستوں اور سارک ممالک کے ساتھ کاروباری تعلقات کا فروغ بنیادی حیثیت کا حامل ہے انہوںنے صدر چیمبر سے اپیل کی کہ اس سلسلے میں چیمبر کے پلیٹ فارم سے خصوصی کوششیں کی جائےں۔

اس موقع پر صدر ڈاکٹر شمائل داﺅدنے کہاکہ راولپنڈی چیمبر خطے میں کاروباری سرگرمیوں کے فروغ کے لیے ہمہ وقت کوشاں رہتا ہے اور حال ہی میں چیمبر نے یو ایس ایڈ اور وزارت تجارت کے ساتھ مل کر وسطی ایشیائی ریاستوں میں کاروباری مواقعوں کے حوالے سے جو کانفرنس منعقد کی اُس کے مثبت اثرات جلد سامنے آئیں گے ، راولپنڈی چیمبر تمام ہمسایہ ممالک کے ساتھ تجارت کے فروغ کا خواہاں ہے اور سارک ممالک کی تجارتی منڈیوں کو اگر صحیح معنوں میں ایکسپلور کیا جائے تو ملک کا دیگر ممالک کے ساتھ تجارت پر انحصار کم ہو جائے گا ۔ انہوں نے کہا کہ کاروباری برادری کو درپیش مسائل کو ہر فورم پر اٹھایا جائے گا اور ان کے حل کےلیے کوئی دقیقہ فروا گزشت نہ رکھا جائے گا۔

مزید : کامرس