جماعت اسلامی وشباب ملی کے کارکنوں کی گرفتاری پرقائم مقام امیرکا شدید ردعمل

جماعت اسلامی وشباب ملی کے کارکنوں کی گرفتاری پرقائم مقام امیرکا شدید ردعمل

لاہور(سٹاف رپورٹر)جماعت اسلامی پنجاب کے قائم مقام امیروقار ندیم وڑائچ اور سیکرٹری جنرل نذیر احمد جنجوعہ نے وہاڑی میں شباب ملی اور جماعت اسلامی کے100سے زائد کارکنوں کی گرفتاری پر اپنے شدید ردعمل کااظہار کرتے ہوئے کہاہے کہ پوراصوبہ پولیس اسٹیٹ بن چکاہے۔ڈی پی او ‘وہاڑی صادق علی ڈوگر کااختیارات کے ناجائز استعمال اور مجرمان کی سرپرستی کرنے کے خلاف شباب ملی اور جماعت اسلامی کے کارکنان نے12سے زائد جگہوںپر،پُر امن مظاہرے کیے مگررات گئے پولیس نے چادر اور چار دیواری کاتقدس پامال کرتے ہوئے سیڑھیاں لگاکر گھروں سے کارکنوں اورجماعت اسلامی ضلعی شوریٰ کے رکن چوہدری محمد افضل اورایم پی اے کے امیدوار صفدرعباس،جماعت اسلامی زون 234کے سیکرٹری امتیاز غازی سمیت سوسے زائد افراد کوغیر قانونی طور پر گرفتار کیاگیا۔جماعت اسلامی پنجاب کے رہنماﺅں نے مطالبہ کیاکہ وزیر اعلیٰ اور آئی جی پنجاب اس واقعے کانوٹس لیں۔جماعت اسلامی کے رہنماﺅں نے مزیدکہاکہ تھانہ کلچر میں اصلاحات کرتے ہوئے اسے محکمے سے کرپٹ عناصر کاقلع قمع ناگریز ہوچکاہے۔کوئی بھی شریف آدمی پولیس سے کوسوںدور رہناہی پسند کرتا ہے۔جائز کام کروانے کے لئے بھی رشوت دینی پڑتی ہے۔وزیراعلیٰ کی ناک کے نیچے قانون کی دھجیاں اڑائی جارہی ہیں اور کوئی پوچھنے والاہی نہیں۔لاقانونیت کی انتہاہوچکی ہے۔وہاڑی میں مظاہرے کے دوران لوگ ڈی پی او کے تبادلے کامطالبہ کررہے تھے اسے جواز بناکر بغیر وارنٹ کارکنوں کوگرفتار کرناتشویش ناک امرہے۔

مزید : میٹروپولیٹن 1