پرویزمشرف کی حاضری سے استثنیٰ کی درخواست مسترد

پرویزمشرف کی حاضری سے استثنیٰ کی درخواست مسترد

اسلام آباد(اے این این) اسلام آباد کی مقامی عدالت میں سابق صدر پرویز مشرف کی حاضری سے استثنیٰ کی درخواست مسترد،عدالت نے یکم مئی کو ذاتی طور پر طلب کر لیا،عدم حاضری پر مشرف کے ضامنوں کے خلاف کارروائی ہو گی۔جمعرات کوسابق صدر مشرف کے خلاف عبد الرشید غازی قتل کیس کی سماعت ایڈیشنل سیشن جج واجد علی کی عدالت میں ہوئی، سماعت کے دوران سابق صدر پرویز مشرف کے وکیل اختر شاہ کی جانب سےسابق صدر کی میڈیکل رپورٹ عدالت میں پیش کی گئی ، سابق صدر کے وکیل نے کہا کہ ڈاکٹر نے پرویز مشرف کو سختی سے سفرکرنے سے منع کیا ہے، سیکیورٹی انتظامات کئے جائیں اور ڈاکٹر اجازت دیں تو پرویز مشرف پہلی دستیاب پرواز سے اسلام آباد آجائیں گے۔اختر شاہ نے عدالت سے پرویز مشرف کی عدالت میں حاضری سے استثنیٰ کی بھی درخواست کی ۔ پراسیکیوٹر عبدالحق ملک ایڈووکیٹ نے پرویزمشرف کی میڈیکل رپورٹ پر اعتراض کرتے ہوئےموقف اختیار کیا کہ عدالت میں پیش کی گئی رپورٹ میں مروجہ طریقہ کار پر عمل نہیں کیا گیا، پرویز مشرف کے انگوٹھے کا نشان یا شناختی کارڈ نمبر رپورٹ پر درج نہیں، رپورٹ میں یہ تک درج نہیں کہ وہ کس اسپتال میں زیر علاج ہیں اور کون سی دوائیں استعمال کررہے ہیں، اس لئے اس رپورٹ کی اہمیت کاغذ کے ٹکرے سے زائد نہیں۔ عدالت نے فریقین کا موقف سننے کے بعد کچھ وقت کے لئے فیصلہ محفوظ کر لیا جو بعد میں سنایا گیا۔عدالت نے سابق صدر کی حاضری سے مستثنیٰ کی درخواست مسترد کرتے حکم دیا کہ آئندہ سماعت یکم جولائی کو سابق صدر پرویز مشرف اوران کے ضمانتی عدالت میں پیش ہوں ۔پرویز مشرف اگر آئندہ سماعت پر پیش نہ ہوئے تو ضامنوں کے خلاف قانونی کارروائی عمل میں لائی جائے گی۔

عبد الرشید غازی قتل کیس

مزید : صفحہ اول