تربیت یافتہ اساتذہ کی تعیناتیاں محکمہ تعلیم کا ہدف ہے، ممتاز حسین شاہ

تربیت یافتہ اساتذہ کی تعیناتیاں محکمہ تعلیم کا ہدف ہے، ممتاز حسین شاہ

لاہور(انٹرویو،ذکاءا للہ ملک،تصاویر ذیشان منیر) ایمرجنسی انرولمنٹ پروگرام کے تحت صوبہ بھر میں 38لاکھ بچوں کو تعلیمی اداروں میں داخل کر لیا گیا، سیکنڈری سکولوں کی حالت بہتر بنانے سمیت تربیت یافتہ اساتذہ کی شفاف تعیناتیاں محکمہ تعلیم کا ہدف ہے۔بوگس انرولمنٹ کے خاتمے اور پنجاب بھر کے سکولوں کی نگرانی کےلئے محکمہ تعلیم کے افسروں کی تمام اضلاع میں فرایض سرانجام دینے سے کوالٹی ایجوکیشن میں مثبت اثرات مرتب ہوئے ہیں۔ڈائریکٹر پبلک انسٹرکشنز سیکنڈری سکولز پنجاب ممتاز حسین شاہ نے کہا کہ اساتذہ کی تقرری و تبادلوں کے نظام کو شفاف بنا کر پبلک سکولوں کے سالانہ نتائج میں واضح بہتری آئے گی۔ ریشنلائزشین کا بنیادی مقصد صوبہ بھر کے سکولوں میں اساتذہ کی کمی و بیشی کو دور کرنے اور بچوں کی تعداد اور سبجیکٹ کے حوالے سے اساتذہ کی تقرری کرنا ہے جس کی بدولت تعلیمی ماحول اور سالانہ نتائج میں مثبت فرق آئے گا۔ لاہور سمیت صوبہ بھر کے ایسے سکول جہاں انرولمنٹ زیادہ نہیں ہے اور جغرافیائی لحاظ سے غیر موزوں ہیں ان سکولوں کو بند کرنے کا فیصلہ زیر غور ہے اور ان بچوں کو قریبی سکولوں میں داخل کیا جائے گا۔ انکا کہنا تھا کہ تبادلے اور پرموشن سروس کا حصہ ہیںاساتذہ یونین کا مقصد اپنی کمیونٹی کا تحفظ ہونا چاہیے،استاد کا اولین فرض تعلیمی اداروں میں بچوں کی تعلیم و تربیت کرنا ہے۔تفصیلات بتاتے ہوئے ڈی پی آئی پنجاب کا کہنا تھا کہ لاہور سمیت صوبہ بھر کے تعلیمی اداروں میں 39لاکھ 80ہزار آﺅٹ آف سکول بچوں کو داخل کرنے کا ہدف ملا تھا اور اب تک 38لاکھ بچے داخل کئے جا چکے ہیں جو کہ محکمہ تعلیم کی اہم کامیابی ہے،اساتذہ کی بروقت پرموشن و سنیارٹی کے معاملات کو بروقت نمٹایا جارہا ہے ،گزشتہ ماہ 186اساتذہ کو گریڈ17سے گریڈ 18میں ترقی دی گئی ہے جبکہ ایجوکیٹرز کی بھرتیوں سے سرکاری سکولوں میں تدریسی ماحول بہتر ہو گا اور سالانہ نتائج بھہ بہتر ہو نگے۔

 ممتاز حسین شاہ

مزید : صفحہ آخر

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...