صحافیوں،تاجروں اور سیاسی رہنماؤں پر حملے ہو سکتے ہیں،آئی جی پنجاب

صحافیوں،تاجروں اور سیاسی رہنماؤں پر حملے ہو سکتے ہیں،آئی جی پنجاب

لاہور(وقائع نگارخصوصی)پنجاب پولیس دہشت گردی سمیت ہر قسم کے چیلنجز سے نمٹنے کے لئے تیار ہے اور یہی وجہ ہے کہ کراچی اےئر پورٹ پر ہونے والے واقعے کے پیشِ نظر پنجاب میں تمام اےئرپورٹس، حساس تنصیبات، سرکاری عمارات ، بزنس سنٹرزاور اہم سیاسی اور مذہبی شخصیات سمیت میڈیا نمائندگان کی سیکیورٹی کو مزید بہتر بنانے کے لئے سیکیورٹی پلان کا نئے سرے سے جائزہ لیا جا رہا ہے اورجس پر حتمی شکل کے بعد صوبے بھر میں فوری طور پر عملد رآمد شروع کر دیا جائے گا،صحافیوں،تاجروں اور سیاسی رہنماؤں پر حملے ہو سکتے ہیں۔ان خیالات کا اظہار انسپکٹر جنرل پولیس پنجاب خان بیگ نے سنٹرل پولیس آفس لاہور میں5اضلاع میں خطرناک اشتہاریوں کو گرفتارکرنے والے افسران میں ہیڈ منی تقسیم کرنے کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ تقریب میں ایڈیشنل آئی جی پنجاب، سرمد سعید خان، ایڈیشنل آئی جی انوسٹی گیشن، خالق داد لک ،ایس ایس پی انوسٹی گیشن وقاص حسن اور سی پی او کے دیگر افسران نے شرکت کی۔تقریب میں5اضلاع لاہور، رحیم یار خان، منڈی بہاؤالدین، حافظ آباد اور قصورکے 45افسران کی سنگین اور خطرناک مجرموں کی گرفتاری کے لئے جرات اور شجاعت کا مظاہرہ کرنے پر 30لاکھ روپے کی رقم تقسیم کی گئی۔ جبکہ 4افسران کو تعریفی اسناد دی گئیں۔ انعامی رقم حاصل کرنے والوں میں 3مخبر بھی شامل تھے۔اس موقع پر آئی جی پنجاب نے کہا کہ معاشرے کے ان ناسوروں کی گرفتاری سے جہاں جرائم کا گراف نیچے آتا ہے وہاں معاشرے میں خوف اور بے چینی میں بھی کمی آتی ہے اور اس کے ساتھ ساتھ افسروں کی حوصلہ افزائی کرنے سے ان کی کارکردگی بھی مزید بہتر ہوتی ہے۔انہوں نے کہا کہ یہی وجہ ہے کہ اس طرح کی تقریبات سال میں دو یا تین مرتبہ باقاعدگی کے ساتھ منعقد کی جاتی ہیں۔صوبائی پولیس سربراہ نے مزید کہا کہ محکمے کی کارکردگی کو مزید بہتر بنانے کے لئے 2014-15کے بجٹ کا زیادہ حصہ آپریشنل ونگ پر خرچ کیا جائے گا تا کہ پنجاب پولیس کو جدید ترین ٹیکنالوجی ، گاڑیاں، آلات، ہتھیار اور بہترین ٹریننگ کے ذریعے ان کی کارکردگی میں اضافہ کیا جا سکے

مزید : صفحہ اول

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...