پنجاب اور سندھ کے بجٹ آج پیش ہوں گے

پنجاب اور سندھ کے بجٹ آج پیش ہوں گے
پنجاب اور سندھ کے بجٹ آج پیش ہوں گے

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

 لاہور،کراچی (مانیٹرنگ ڈیسک )صوبہ پنجاب اور سندھ کے بجٹ آج پیش ہوں گے۔نجی ٹی وی کے مطابق پنجاب کے آئندہ مالی سال کے بجٹ میں سالانہ ترقیاتی پروگرام کا حجم 330 ارب روپے رکھنے کی توقع ہے۔لاہور میں میٹرو ٹرین، فیصل آباد اور ملتان میں میٹرو بس ، ملازمین کی تنخواہوں اور پنشن میں 10 فیصد اضافے کا فیصلہ کیا گیا ہے، گاڑیوں کی رجسٹریشن اور ٹوکن فیس میں اضافہ اور بڑے گھروں پر لگژری ٹیکس لگانے کی تجویز ہے،زرعی آلات، قرضوں اور فصلوں کی انشورنس پر سبسڈی ملے گی اور ہیلتھ انشورنس سکیم بھی بجٹ کا حصہ ہو گی۔ لاہور میں میٹرو ٹرین، فیصل آباد اور ملتان میں میٹرو بس منصوبہ بھی شروع کیا جائےگا،معاشی ترقی کا چار سالہ منصوبہ بھی بجٹ کے ساتھ پیش ہوگا۔ادھر سندھ کے آئندہ مالی سال کے بجٹ میں سالانہ ترقیاتی پروگرام کا حجم 168 ارب روپے ہوگا، آمدنی کا تخمینہ135 ارب، بجٹ خسارے کا تخمینہ 10سے 12 ارب روپے لگایا گیا ہے،کراچی میں ریپڈ بس سسٹم کے لئے تین ارب روپے مختص کئے گئے ہیں،پولیس میں 12 ہزار، تعلیم، صحت اور دیگر شعبوں میں آٹھ ہزار نئی ملازمتیں پیدا کی جائیں گی جس پر اخراجات کا تخمینہ چھ ارب روپے لگایا گیا ہے۔ پراپرٹی ٹیکس کی شرح میں اضافہ متوقع ہے۔ پولیس کے لئے 47ارب، رینجرز، ایف سی اور جیل پولیس کے لئے آٹھ ارب روپے رکھنے کی تجویز ہے۔ امن و امان کے شعبے کے لئے 55ارب روپے رکھے جائیں گے۔ تعلیم کے لئے مجموعی طور پر 122 ارب اور صحت کے لئے 46 ارب روپے مختص کئے گئے ہیں۔ مفت درستی کتابوں کی فراہمی کے لئے 1.5 ارب روپے رکھنے کی تجویز ہے۔

مزید : بجٹ