ہندوچھابڑی فروش کو تشدد کا نشانہ بنانے والا پولیس کانسٹیبل گرفتار، مقدمہ درج

ہندوچھابڑی فروش کو تشدد کا نشانہ بنانے والا پولیس کانسٹیبل گرفتار، مقدمہ درج
ہندوچھابڑی فروش کو تشدد کا نشانہ بنانے والا پولیس کانسٹیبل گرفتار، مقدمہ درج

  

گھوٹکی (مانیٹرنگ ڈیسک) ایک پولیس کانسٹیبل کو مبینہ طور پر بزرگ ہندوچھابڑی فروش کو رمضان میں کھانے کی اشیا فروخت کرنے پر تشدد کا نشانہ بنانے کے الزام میں گرفتار کرلیا گیا ہے۔

جمعہ کو چھابڑی فروش گوکل داس افطار سے پونا گھنٹہ پہلے کھانے کی اشیا فروخت کررہا تھا کہ اسی اثنا میں پولیس کانسٹیبل علی حسن آگیا اور بزرگ ہندو چھابڑی فروش پر رمضان المبارک کا احترام نہ کرنے پر شدید تشدد شروع کردیا۔ بعد ازاں گوکل داس کے زخمی ہاتھوں کی تصویریں سوشل میڈیا پر آتے ہی وائرل ہوگئیں جس پرآئی جی سندھ اے ڈی خواجہ نے واقعہ کا نوٹس لے لیا۔ آئی جی سندھ کی ہدایت پر ایس ایس پی گھوٹکی مسعود بنگش نے کانسٹیبل علی حسن کے خلاف آئین کی دفعہ 337، 504 اور 506/2 کے تحت مقدمہ درج کرلیا۔ جس کے بعد ہفتہ کو پولیس کانسٹیبل کو گرفتار کرلیا گیا اور اس گرفتاری کی تصدیق بختاور بھٹو زرداری نے اپنے ایک ٹویٹ میں بھی کی ۔

مزید : گھوٹکی