بالی ووڈ کے پروڈیوسرز پاکستانی ماڈلز اور ادکاراؤں کو کاسٹ کرنے کیلئے بے چین

بالی ووڈ کے پروڈیوسرز پاکستانی ماڈلز اور ادکاراؤں کو کاسٹ کرنے کیلئے بے چین

لاہور(فلم رپورٹر) بالی ووڈ کے پروڈیوسرز پاکستانی ماڈلز اور ادکاراؤں کو کاسٹ کرنے کے لئے بے چین ہیں لیکن انتہاء پسندوں کے خوف سے کوئی بھی ماڈل اور اداکارہ بھارت جانے کو تیار نہیں ہے۔ بالی وڈ کی بڑی پروڈکشن کمپنیوں نے پاکستانی کی ٹاپ ماڈلز اور ٹی وی اداکاراؤں کو اپنی فلموں میں کاسٹ کرنے کے لئے کئی بار رابطے کئے ہیں لیکن ابھی تک کسی سے بات فائنل نہیں ہوسکی ۔ذرائع نے بتایا ہے کہ عائشہ خان، ماہ نور بلوچ، آمنہ شیخ،ایمان علی، مہوش حیات،صبا قمر، ایان علی، عائزہ خان ،صنم سعید،عائشہ عمر اورنادیہ حسین کو مختلف پروڈیوسر اور ڈائریکٹر کی طرف سے پیشکش موصول ہوئی ہیں لیکن کوئی بھی اداکارہ بالی ووڈ میں کام کرنے کے لئے تیار نہیں ہے ۔بالی ووڈ کے مقبول میوزک ڈائریکٹر اسماعیل دربار ان دنوں بطور پروڈیوسر فلم بنانے کی تیاری کررہے ہیں لیکن انہوں نے بالی وڈ سے کسی اداکارہ کو کاسٹ نہیں کیا بلکہ پاکستانی ماڈلز سے رابطہ کرنے کے ساتھ ساتھ اپنے پاکستانی دوستوں سے بھی کہا ہے کہ انہیں ہیروئین تلاش کر کے دی جائے۔ڈائریکٹر موہت سوری بھی اپنی نئی فلم میں پاکستانی لڑکی کو کاسٹ کرنے کے خواہشمند ہیں۔ذرائع نے بتایا ہے کہ پہلے پاکستانی لڑکیوں کو بھاری معاوضے کا لالچ دیا جارہاہے۔ اس حوالے سے گفتگو کرتے ہوئے ایمان علی نے کہا کہ بھارت میں لڑکیوں کی کمی نہیں ہے ۔وہاں کے پروڈیوسرز اپنے ذاتی مفادات کے لئے ہی پاکستای لڑکی سے رابطہ کرتے ہیں۔ مجھے ماضی میں امتیاز علی سمیت کئی لوگوں کی طرف سے پیشکش ملی ہیں لیکن میں نے انکار کردیا ۔اداکارہ عائشہ عمر کا کہنا ہے کہ مجھے بالی وڈ میں کام کرنے کا کوئی شوق نہیں ہے۔

مزید : کلچر