ہٹلر کی کتاب کی مفت پیشکش پر طالوی اخبار کو سخت تنقیدکا سامنا

ہٹلر کی کتاب کی مفت پیشکش پر طالوی اخبار کو سخت تنقیدکا سامنا

روم(این این آئی)اطالوی اخبارکو ہٹلر کی کتاب کی مفت پیش کش کرنے پر سخت تنقید کا سامنا ہے ،اخبار نے اپنے ایک سپلیمنٹ کے ساتھ جرمنی کے رہنما اڈولف ہٹلر کی خودنوشت ’مین کیمف‘ کی مشرح کاپی مفت دینے کی پیش کی تھی۔اٹلی کے وزیر اعظم میٹیو رینزی نے اس فیصلے کو ’مکروہ‘ قرار دیا ہے جبکہ دوسروں نے اخبار پر اپنی فروخت بڑھانے کے لیے کتاب کے استعمال کا الزام لگایا ہے۔اطالوی اخبارنے گزشتہ روز اپنی رپورٹ میں بتایا کہ اس سے ان کے قارئین کو نازیوں کے نظریے کی برائیوں کا علم ہوگا۔اخبار نے اپنی اشاعت کے ساتھ نازی جرمنی کے متعلق ایک کتاب فروخت کی اور اس کتاب کے خریدنے والے کے لیے مین کیمف کی ایک مفت کاپی کا اعلان کیا۔اخبار کے مدیر الیسانڈرو سیلوسٹی نے اطالوی زبان میں کہا کہ اس کے مطالعے سے قارئین کو یہ پتہ چلے گا کہ اس کی واپسی کو روکنے کے لیے کن خرابیوں سے دور رہنا ہے۔انھوں نے کہاکہ ہماری اطالوی یہودی برادری کو ہمیشہ اس کا خدشہ ہے لیکن ہم ان کے ساتھ ہیں اور وہ ہمیشہ ہمیں اپنے ساتھ پائیں گے۔

ہم ان کی قدر کرتے ہیں۔اخبار نے اس بات پر بھی زور دیا کہ جو کاپی وہ مفت فراہم کر رہے ہیں اس میں ایک اطالوی تاریخ داں کی تنقیدی تشریح بھی شامل ہے۔بہرحال اطالوی یہودی برادریوں کی تنظیم کے صدر رینزو گیٹنگا نے بھی اسے ’مکروہ عمل‘ قرار دیا۔ گیٹنگا نے کہا کہ یہ پیشکش غیر مہذب ہے اور ہولوکاسٹ کی تفصیلی معلومات فراہم کرنے سے یہ نوری سال دور ہے۔خیال رہے کہ رواں سال اس کتاب کی کاپی رائٹ ختم ہو گئی ہے جو کہ پہلے جرمنی باویریا کے علاقائی حکومت کے پاس اس کے حقوق محفوظ تھے۔

مزید : عالمی منظر