گھر سے بھاگ کرشادی کرنا درحقیقت بربادی ہے ، ناصر اقبال

گھر سے بھاگ کرشادی کرنا درحقیقت بربادی ہے ، ناصر اقبال

  



لاہور(نمائندہ خصوصی)ہیومن رائٹس موومنٹ کے مرکزی صدرمحمدناصراقبال خان ،سیکرٹری جنرل محمدرضاایڈووکیٹ ،سینئر نائب صدورمحمدفاروق چوہان، ندیم اشرف،تنویرخان،میاں زاہدلطیف،صدرمدینہ منورہ سرفرازخان نیازی،صدر کراچی یونس میمن،نائب صدرپنجاب مہر محمدسلیم ،صدر چنیوٹ راناشہزادٹیپو،صدر فیصل آبادندیم مصطفی اور صدر قصور میاں اویس علی نے کہا ہے کہ گھر سے بھاگ کرشادی کرنا درحقیقت بربادی ہے ۔دوافرادکی خواہشات کی قیمت اداکرنے کیلئے دوخاندان ایک دوسرے کے دشمن بن جاتے ہیں۔ماں باپ کوبیٹیاں قتل کرنے کاحق پہنچتا ہے اورنہ بیٹیاں ماں باپ کی ناموس روندنے کاحق رکھتی ہیں۔اس مجرمانہ روش کوروکنے کیلئے ان شادیوں کو سنگین جرم قراردیاجائے ورنہ غیرت کے نام پرحواکی بیٹیاں قتل ہو تی رہیں گی۔ہمارے معاشرے میں خدانخواستہ جس خاندان کی بیٹی گھر سے بھاگ جائے ا نہیں لوگ طعنے مار مار کے ماردیتے ہیں،مگرایسے قتل کاچرچاہوتا ہے اورنہ مقدمات درج ہوتے ہیں۔ کوئی مہذب معاشرہ گھروں سے بھاگ کرشادیوں کامتحمل نہیں ہوسکتا۔وہ ایک اجلاس سے خطاب کررہے تھے ۔محمدناصراقبال خان نے مزید کہا کہ بچوں کی شادیوں کے سلسلہ میں ماں باپ کے فیصلے غلط ہوسکتے ہیں مگران کی نیت پرشک نہیں کیا جاسکتا۔پسنداورمحبت کی شادی جائز ہے ،اسلامی تعلیمات کی روسے والدین بیٹیوں اوربیٹوں کی پسندناپسندکااحترام کریں۔انہوں نے کہا کہ اپنے ماں باپ کی حمیت اور خاندان کی آن ملیامیٹ کرکے گھروں سے بھاگ کرشادیوں کے نتیجہ میں بے حیائی کوفروغ ملتا ہے اورجس گھر سے ایک بیٹی بھاگ جائے وہاں دوسرے بھائی بہنوں کیلئے کوئی رشتہ نہیں آتا۔گھر سے بھاگ کر جو شادیاں ہوتی ہیں اس سے معاشرے میں بگاڑپیداہوتا ہے جبکہ ان میں طلاق کی شرح بھی بہت زیادہ ہے اوران لڑکیوں کوسسرال سمیت معاشرے میں کوئی بھی عزت کی نگاہ سے نہیں دیکھتا اوران کے ہاں پیداہونیوالے بچے بھی نفرت اورطعنوں کی زدمیں آتے ہیں۔انہوں نے کہا کہ جونام نہادمحبت ماں باپ اوربہن بھائیوں کی حقیقی اورسچی محبت پرغالب آجائے وہ ہوس اورگمراہی ہے۔ جو بیٹیاں گھروں سے بھاگ کرشادی کرنے کے نتیجہ میں اپنے ماں باپ یابھائیوں کے ہاتھوں ماری گئی ہیں درحقیقت ان کے شوہر ان کے قاتل ہیں انہیں بھی گرفتارکیا جائے ۔جومرددوسروں کی بیٹیوں کے ساتھ شادیاں کرنے کیلئے انہیں گھروں سے بھاگنے پراکساتے اورورغلاتے ہیں وہ مستقبل میں خودبھی اپنی بیٹیوں کاگھر سے بھاگ کرشادیاں کر ناپسندکریں گے اورنہ ان سے بیٹیوں کی بغاوت برداشت ہوگی ۔

مزید : میٹروپولیٹن 1