ممبئی حملوں کے وقت بھارتی سکیورٹی حکام پاکستان میں موجودتھے

ممبئی حملوں کے وقت بھارتی سکیورٹی حکام پاکستان میں موجودتھے

  



نئی دہلی (مانیٹرنگ ڈیسک) بھارتی میڈیا نے ایک اہم انکشاف کرتے ہوئے کہا ہے کہ تاج ہوٹل ممبئی پر 26 نومبر 2008ء کو ہونے والے حملے کے وقت بھارت کے اعلیٰ سیکیورٹی حکام پاکستان کے شہر مری میں تھے۔بھارتی خبر رساں ادارے ’’انڈیا ٹوڈے‘‘ کے مطابق بھارت کے ہوم سیکرٹری مدھوکر گپتا، ایڈیشنل سیکرٹری انور احسان احمد، جوائنٹ سیکرٹری دپتی ویلاسا اور تین دیگر سیکیورٹی حکام ممبئی حملوں کے وقت مری میں موجود تھے۔ اخبار نے سابق انڈر سیکرٹری آر وی ایس مانی کے حوالے سے بتایا ہے کہ ان برسوں میں پاکستان اور بھارت کے درمیان مذاکرات ہو رہے تھے۔ یہ مذاکرات 2006ء میں پاکستان میں ہوئے اور 2007ء میں بھارت میں ان مذاکرات کی نشست ہوئی جس کے 2008ء میں دوبارہ پاکستان میں مذاکرات ہونا طے پائے۔آر وی ایس مانی نے کہا کہ ’’یہ مذاکرات 25 نومبر کو طے پائے تھے اور بھارتی وفد 24 نومبر کو پاکستان پہنچ گیا تھا۔ پھر ہمیں یہ پتہ چلا کہ وفد کا کے دورہ پاکستان میں ایک روز کا اضافہ کرتے ہوئے 26 نومبر تک کر دیا گیا ہے جس دن یہ حملے ہوئے‘‘۔ ایک سوال کے جواب آر وی ایس مانی نے کہا کہ ’’ حملوں کے بعد بھارتی وفد تک رسائی حاصل کرنے کی کوشش کی گئی لیکن لیکن ایسا نہ ہو سکا‘‘۔ ہاں یہ امر بھی قابل ذکر ہے کہ بھارت نے 2008ء میں ہونے والے ممبئی حملوں کا الزام پاکستانی تنظیم لشکر طیبہ پر عائد کر رکھا ہے۔ تمام حملہ آور جوابی کارروائی میں مارے گئے تھے اور صرف ایک حملہ آور اجمل قصاب گرفتار ہوا تھا جسے بعدازاں عدالتی حکم پر پھانسی دی گئی۔

انکشاف

مزید : علاقائی