صحت کی سہولتیں اور ڈسٹرکٹ ہیڈکوارٹر ہسپتال!

صحت کی سہولتیں اور ڈسٹرکٹ ہیڈکوارٹر ہسپتال!

  



معاصر کی خبر کے مطابق صوبائی حکومت نے نئے مالی سال کے دوران اضلاع کے ہسپتالوں کو اپ گریڈ کرنے کا فیصلہ کیا اور اس مقصد کے لئے ہر ہسپتال کے لئے دس کروڑ روپے مختص کئے جا رہے ہیں۔یہ ایک اچھا فیصلہ ہے لیکن مختص رقم کم نظر آتی ہے۔ اس وقت صورت حال یہ ہے کہ ڈسٹرکٹ ہیڈ کوارٹر ہسپتالوں کی حالت کوئی بہتر نہیں ہے اور ان کے حوالے سے جراحی آلات اور مشینری کی کمی اور خرابی کے علاوہ عملے کی قلت کی شکائت بھی ہے اور یہ بھی کہا جاتا ہے کہ بہتر سہولتیں نہ ہونے کی وجہ سے ماہر ڈاکٹر بھی ضلعی ہسپتالوں میں کام سے گریز کرتے ہیں۔ ادھر صورت حال یہ ہے کہ اچھے طبی ماہرین سے بات ہو تو ان کا کہنا ہے کہ ڈسٹرکٹ ہیڈکوارٹر ہسپتال اپ گریڈ کر دیئے جائیں اور بڑے شہروں میں اضلاع سے صرف وہی مریض آئیں جو ان ہسپتالوں سے باقاعدہ تحقیق کے بعد بھیجے جائیں تو نہ صرف بڑے شہروں کے بڑے ہسپتالوں پر بوجھ کم ہو گا، بلکہ اضلاع اور نواحی علاقوں کے ضرورت مند مریض بھی علاج کی بہتر سہولتیں حاصل کر سکیں گے۔ ایسی سفارشات کئی بار کی جا چکی ہیں۔ چلیں اب خیال آ ہی گیا تو پھر اتنی کم رقم سے کام نہیں چلے گا اس عمل کو باقاعدہ منصوبہ بندی کے ساتھ کرنے کی ضرورت ہے۔ مشینری، آلات جراحی، عمارت، بستر، ڈسپنسری اور ٹیسٹ لیبارٹریوں کی سہولت بھی بہم پہنچانا ضروری ہے اس لئے بہتر عمل یہ ہے کہ ان ہسپتالوں کا باقاعدہ سروے کرکے طے کیا جائے کہ ان کے لئے کیا ضروری ہے اور کتنی رقم سے یہ فعال کردار ادا کریں گے۔ بجٹ کا بجٹ کل پیش ہوگا ۔اس سکیم یا تجویز کے خدوخال مرتب کئے جا سکتے ہیں۔ طبی سہولتیں زیادہ ہو جائیں گی تو مسائل بھی حل ہوں گے شکایات بھی دور ہوں گی اس لئے باقاعدہ پالیسی بنا کر زیادہ رقوم مختص کی جائیں۔

مزید : اداریہ