تخت بھائی میں گراں فروشوں کا راج ،کوئی پرسان حال نہیں

تخت بھائی میں گراں فروشوں کا راج ،کوئی پرسان حال نہیں

تخت بھائی ( نمائیندہ پاکستان) تخت بھائی میں اندھیر نگری اور چوپٹ راج کا قانون کوئی پوچھنے والا نہیں رمضان المبارک شروع ہوتے ہی قصائیوں ،سبزی فروشوں ، پھل فروشوں ،برف کے بیوپاریوں نیاپنے من پسند نرخ مقرر کرکے غریب عوام کو دونوں ہاتھوں سے لوٹنے لگے بیمار اور لاغر جانوروں کی گوشت کھلے عام فروخت جاری محکمہ فوڈ ،وٹرنری ڈاکٹروں ،میونسپل کمیٹی کے اہلکاروں اور مقامی انتظامیہ نے انکھیں بند کرکے خواب خرگوش کے نیند سو کر خراٹے لے رہے ہیں غریب عوام کی کوئی پرسان حال نہیں تخت بھائی کے سیاسی و سماجی حلقوں نے صوبائی حکومت سے اصلاح احوال کا مطالبہ کر دیا ہے تفصیلات کے مطابق تحصیل تخت بھائی کے مختلف علاقوں شیر گڑہ ، لوند خوڑ ، جھنڈئی ، فضل اباد، ٹکر ،جلالہ اور دیگر علاقوں میں قصائیوں کی من مانی ریٹ مقر ر کرکے گوشت فی کلو 350/450فروخت کرتے ہیں چھوٹا گوشت 700/800روپے میں بک رہے ہیں تخت بھائی بازار میں گوشت کی کوئی چیک اینڈ بیلنس نہیں ہیں بیمار ،کمزور اور لاغر جانوروں کی گوشت کھلے عام فروخت ہو رہی ہیں ٹماٹر 50بنڈی70کریلا75پیاز40شملہ مرچ100 کدو110 کچالو80الو40بینگن60لیموں 180روپے فی کلو فروخت ہو رہی ہیں تربوز30خربوز50آم 140/150/الوچا 180خوبانی165جبکہ دودہ دہی 100/110روپے میں فروخت جاری ہیں برائلرمرغی 190روپے کلو جب کہ ایک مرغی 280/370فی دانہ عوام کو مل رہی ہیں لیکن اس کے باوجود بھی مقامی انتظامیہ ٹس سے مس نہیں ہو تا تخت بھائی کے سیاسی وسماجی حلقوں نے حکومت سے ناجائز منافع خوروں کے خلاف فوری کاروئی کی جائے

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر