پاکستان کے ایٹمی ہتھیاروں کے بارے میں اب تک کی سب سے بڑی خبرآگئی

پاکستان کے ایٹمی ہتھیاروں کے بارے میں اب تک کی سب سے بڑی خبرآگئی
پاکستان کے ایٹمی ہتھیاروں کے بارے میں اب تک کی سب سے بڑی خبرآگئی

  



سٹاک ہوم (مانیٹرنگ ڈیسک) سٹاک ہوم انٹرنیشنل پیس ریسرچ انسٹی ٹیوٹ(SIPRI) نے دعویٰ کیا ہے کہ پاکستان اپنے ایٹمی ہتھیاروں میں آئندہ 10سالوں میں نمایاں اضافہ کرے گا، دوروایتی حریف ممالک بھارت اور پاکستان ہرممکن حدتک اپنی صلاحیتوں میں اضافہ کررہے ہیں ،بھارت اپنے بیلسٹک میزائل پروگرام کو وسعت اور پلوٹونیم کی پیداوارتیزکررہاہے جبکہ پاکستان پڑوسی ملک بھارت کی روایتی طاقت کے خلاف جنگی ایٹمی ہتھیار وں کو ترقی دے رہاہے ۔

ایکسپریس ٹربیون کے مطابق SIPRIنے اپنی سالانہ رپورٹ میں خبردار کیاہے کہ پاکستان کے نیوکلیئرہتھیاروں میں آئندہ عشرے میں اضافہ ہوسکتاہے جبکہ دنیا کی بڑی ایٹمی طاقتیں امریکہ اور روس آہستہ آہستہ ایٹمی ہتھیاروں کی تعداد میں کمی لاتے ہوئے اُنہیں جدید بنارہے ہیں ۔

سالانہ رپورٹ کے مطابق 2016ءکے آغاز تک امریکہ ، روس ، برطانیہ ، فرانس ، چین ، بھارت ، پاکستان ، اسرائیل اور شمالی کوریا کے پاس مجموعی طورپر 15,395ایٹمی ہتھیارموجود تھے جن میں سے 4120مختلف مقامات پر تعینات ہیں ۔ 2015ءکے اوائل میں یہی تعداد 15,850تھی ۔

SIPRIنے کہاہے کہ 80کی دہائی میں 70,000کے قریب ایٹمی ہتھیاروں کیساتھ اپنے عروج پر ہونے کے بعد عالمی طورپر ایٹمی ایجادات میں بدستور کمی ہورہی ہے اور اس کی بنیادی وجہ امریکی و روسی نیوکلیئرفورسز میں کمی ہے جبکہ ہتھیاروں کی کمی کیلئے 1991ءسے تین معاہدے بھی ہوچکے ہیں ۔ایک اندازے کے مطابق 2016 ءکے اوائل میں روس کے پاس 7290اور امریکہ کے پاس 7000ایٹمی ہتھیار موجود تھے ، دونوں ممالک کے ہتھیار دنیا میں مجموعی ہتھیاروں کا 93فیصد ہے ۔ فرانس کے پاس 300 ، چین 260 ، برطانیہ 215، پاکستان ، 110-130، بھارت 100-120، اسرائیل 80اور شمالی کوریا کے پاس 10ایٹمی ہتھیار ہیں تاہم عالمی تنہائی کی وجہ سے شمالی کوریا کے ایٹمی ہتھیاروں کے مکمل اعدادوشمار موجود نہیں ۔

مزید : قومی /اہم خبریں