حضرت عائشہ طاہرہ سلام اللہ علیہا

حضرت عائشہ طاہرہ سلام اللہ علیہا

جنابِ سیدہ تم ہو جنابِ طاہرہ تم ہو

جو خالق کی نظر میں پاک ہے وہ عائشہ تم ہو

تمہارے واسطے نازل ہوئی ہیں آیتیں کتنی

خدائے لم یزل کہتے ہیں جن کو طیبہ تم ہو

خدا نے آپ ہی جس کے تقدس کی گواہی دی

محمدؐ مصطفی کی وہ شریکِ باحیا تم ہو

تمہارا آیہ ء تطہیر میں ذکر مبارک ہے

نزولِ سورۃِ النور کا بھی مدعا تم ہو

مفسر کی گھتیوں کو کتنی آسانی سلجھایا

رموزِ نص قرآنی کی بھی تو عارفہ تم ہو

تمہیں معلوم ہیں جتنے بھی ہیں آداب سنت کے

نبیؐ کی حُسنِ سیرت سے مکمل آشنا تم ہو

صحابہؓ نے اگرچہ حل کئے ہیں سینکڑوں قضیے

مگر خلوت کی باتوں کی فقط مشکل کشا تم ہو

محقق بھی معلم بھی مبلغ بھی مودب بھی

علومِ دیں کے مخزن کا وہ دُرِ بے بہا تم ہو

قیادت کی ہے فوجوں کی ضرورت آ پڑی جس دم

شدائد میں رہے قائم وہ محکم رہنما تم ہو

گزاری زندگی اکثر فقط دو سادہ جوڑوں میں

قناعت جس پر حیراں ہے وہ آخر زاہدہ تم ہو

سراپا پیکرِ عصمت منزہ صاحبِ عرفاں

نظیرِ مریمِ اطہر یقیں کی آسیہ تم ہو

تمہاری چادر عصمت پہ قرباں نیکی و پاکی

معاصی جس سے لرزاں ہیں وہ یکسر پارسا تم ہو

پیغمبرؐ کے گھرانے میں اگرچہ پھول ہیں سب ہی

مہکتا جس سے گلشن ہے وہ بوئے دلکشا تم ہو

جہانِ حب میں رتبہ اس سے بڑھ کر او رکیا ہوگا

حبیبِ مصطفی تم ہو حبیبِ کبریا تم ہو

تمہارے پاک بستر پر ہوئی نازل وحی خورشید

نبیؐ کے اہلِ خانہ میں بہت ذی مرتبہ تم ہو

خورشید عالم خوڑشید

مزید : ایڈیشن 1