سرفراز نے دھوکہ نہیں دیا ، شاہین لنکا ڈھا کر چیمپئنز ٹرافی کے سیمی فائنل میں پہنچ گئے

سرفراز نے دھوکہ نہیں دیا ، شاہین لنکا ڈھا کر چیمپئنز ٹرافی کے سیمی فائنل میں ...

کارڈف ( افضل افتخا ر )پاکستان نے کپتان سرفراز احمد اور فخز زمان کی عمدہ بیٹنگ کی بدولت سری لنکا کو سنسنی خیز مقابلے کے بعد تین وکٹ سے شکست دے چیمپیئنز ٹرافی کے سیمی فائنل کیلئے کوالیفائی کر لیا۔ مشکل ترین وقت میں سرفراز احمد اور محمد عامر نے ناقابل یقین بلے بازی کا مظاہرہ کرتے ہوئے سری لنکا کے جبڑوں سے فتح چھینی۔ پاکستان نے سری لنکا کو سرفراز احمد کے 61 اور محمد عامر کے 28 رنز کے باعث 237 رنز کا ہدف 45 اوور میں پورا کر لیا۔ آئی سی سی چیمپیئنز ٹرافی کے آخری گروپ میچ میں پاکستان نے سری لنکا کے خلاف ٹاس جیت کر پہلے باؤلنگ کا فیصلہ کیا ۔سری لنکا کی پوری ٹیم اننگز کے آخری اوورز میں 236 رنز بنا کر ڈھیر ہو گئی۔سری لنکا نے بیٹنگ کا آغاز کیا تو گزشتہ میچ میں عمدہ بیٹنگ کا مظاہرہ کرنے والے دنشکا گناتھیلاکا صرف 13 رنز بنانے کے بعد پویلین لوٹ گئے۔پہلی وکٹ گرنے کے بعد نروشن ڈکویلا اور کشال مینڈس نے عمدہ بیٹنگ کا مظاہرہ کرتے ہوئے اسکور کو 82 تک پہنچا دیا لیکن اسی اسکور پر حسن علی کی شاندار ان سوئنگ گیند نے مینڈس کی وکٹیں بکھیر دیں۔ابھی سری لنکن ٹمی اس نقصان سے سنبھلی بھی نہ تھی کہ پہلا میچ کھیلنے والے دنیش چندیمل کو پویلین لوٹا کر انٹرنیشنل کرکٹ میں پہلی وکٹ حاصل کی۔83 رنز پر تین وکٹیں گرنے کے بعد سری لنکن کپتان اینجلو میتھیوز کی وکٹ پر آمد اور انہوں نے ڈکویلا کے ساتھ مل کر اسکور کو بتدریج بڑھانا شروع کیا۔دونوں کھلاڑیوں نے مشکل صورتحال میں 78 رنز جوڑ کر اپنی ٹیم کی پوزیشن مستحکم کر دی۔اس سے قبل یہ شراکت مزید خطرناک ثابت ہوتی، سرفراز احمد اپنے سب سے اہم ہتھیار محمد عامر کو باؤلنگ کیلئے لے کر آئے جنہوں نے کپتان کے اعتماد پر پورا اترتے ہوئے سری لنکن قائد میتھیوز کی وکٹیں بکھیر دیں، انہوں نے 39 رنز بنائے۔دوسرے اینڈ سے جنید خان نے بھی عامر کو بھرپور ساتھ نبھایا اور ڈی سلوا کو پویلین چلتا کردیا۔تاہم سری لنکا کو سب سے بڑا نقصان اس وقت پہنچا جب 73 رنز بنانے والے ڈکویلا محمد عامر کی گیند کو سمجھنے میں ناکام رہے اور سرفراز کو کیچ دے بیٹھے۔پاکستان کی جانب سے حسن علی اور جنید خان نے تین تین جبکہ محمد عامر اور فہیم اشرف نے دو دو وکٹیں لیں۔پاکستان نے ہدف کا تعاقب شروع کیا تو فخر زمان نے گزشتہ میچ کی طرح اس میچ میں بھی جارحانہ انداز اختیار کیا اور قومی ٹیم کو 78 رنز کا عمدہ آغاز فراہم کیا۔وہ 36 گیندوں پر 50 رنز کی اننگز کھیلنے کے بعد پویلین لوٹے۔ایک اچھے آغاز کے باوجود پاکستانی بیٹنگ لائن ایک مرتبہ پھر ڈگمگا گی اور 110 رنز تک چار کھلاڑی پویلین لوٹ چکے تھے۔شعیب ملک اور کپتان سرفراز احمد نے اسکور کو 131 تک پہنچایا ہی تھا کہ لاستھ ملنگا نے شعیب کو پویلین واپسی پر مجبور کردیا جبکہ دو رنز کے اضافے سے عماد وسیم بھی پویلین لوٹ گئے۔پہلا میچ کھیلنے والے فہیم اشرف نے متاثر کن بیٹنگ کا مظاہرہ کیا لیکن وہ اس وقت بدقسمت ثابت ہوئے جب سرفراز احمد کی جانب سے وکٹوں کی طرف کھیلے گیا شاٹ باؤلر کی انگلیوں سے لگ کر وکٹوں سے ٹکرا گئی اور کریز سے باہر ہونے کے سبب وہ آؤٹ قرار پائے۔162 رنز پر سات وکٹیں گرنے کے بعد قومی ٹیم کی شکست صاف نظر آنے لگی تھی لیکن سرفراز احمد سری لنکا کی راہ میں حائل ہو گئے اور انہوں نے محمد عامر کے ساتھ 75 رنز کی ناقابل شکست شراکت قائم کر کے پاکستان کو شاندار فتح سے ہمکنار کرانے کے ساتھ ساتھ سیمی فائنل میں بھی پہنچا دیا۔مین آف دی میچ سرفراز نے 61 جبکہ محمد عامر نے 28 رنز کی ناقابل شکست اننگز کھیلی۔ویلز کے شہر کارڈف میں کھیلے جانے والے اس میچ میں گروپ بی کی ٹیمیں پاکستان اور سری لنکا مد مقابل ہیں جہاں یہ میچ دونوں ٹیموں کے لیے انتہائی اہمیت کا حامل ہے۔یہ آخری گروپ مقابلہ کوارٹر فائنل کی حیثیت اختیار کر گیا ہے کیونکہ اس مقابلے کو جیتنے والی ٹیم ایونٹ میں اب تک کی سب سے کامیاب ٹیم انگلینڈ سے سیمی فائنل میں مقابلہ کرے گی جبکہ ہارنے والی ٹیم کے لیے یہ ایونٹ تمام ہوجائے گا۔پاکستان نے ایونٹ میں اب تک دو میچ کھیلے ہیں جہاں پہلے میچ میں اسے بھارت کے ہاتھوں 124 رنز کی عبرتناک شکست کا سامنا کرنا پڑا تھا جبکہ دوسرے میچ میں عالمی نمبر ایک ٹیم جنوبی افریقہ کو ڈک ورتھ لوئس قانون کے تحت 19 رنز سے شکست سے دوچار کیا تھا۔

مزید : صفحہ اول