کوہاٹ،ریاض منصور اغواء کیس میں اغواء ناقص انکوائری کے مرتکب دو پولیس آفیسرز برخاست

کوہاٹ،ریاض منصور اغواء کیس میں اغواء ناقص انکوائری کے مرتکب دو پولیس آفیسرز ...

کوھاٹ (بیورو رپورٹ) ریاض منصور اغوائیگی کیس میں ناقص انکوائری کے مرتکب دو پولیس افسران برخاست جبکہ ایک انسپکٹر کو سب انسپکٹر بنا دیا گیا تفصیلات کے مطابق کوھاٹ کی مشہور پراچہ فیملی کے ممبر اور سابقہ چیف سیکرٹری‘ سابقہ چیئرمین پبلک سروس کمیشن خالد منصور پراچہ اور ممبر پبلک سروس کمیشن طارق منصور پراچہ کے بھائی ریاض منصور پراچہ جنہیں 23 مارچ 2011 کو مبینہ طور پر اغواء کر لیا گیا تھا اور جس کی رپورٹ تھانہ سٹی میں کی گئی تھی مگر پولیس کی عدم دلچسپی اور کیس میں غلط دفعات لگانے اور مغوی کے اہلخانہ کی شکایت پر کیس کی دوبارہ انکوائری ریجنل پولیس آفیسر دار علی خٹک نے انکوائری کی تھی اور الزامات درست ثابت ہونے پر DSP صدر سرکل حسین غلام‘ سب انسپکٹر سادہ خان اور ASI یوسف حیات کے خلاف کارروائی کی سفارش کی گئی تھی جس پر ڈسٹرکٹ پولیس آفیسر جاوید اقبال کی سربراہی میں مزید انکوائری کے لیے ٹیم تشکیل دی گئی جس میں ایس پی انوسٹی گیشن ثناء اللہ خان DSP رضا خان اور ایس ایچ او امجد حسین شامل تھے کمپنی کی غیر جانبداری انکوائری کے نتیجے اور ناقص تفتیش کے الزامات درست ثابت ہونے پر ASI یوسف حیات اور سب انسپکٹر سادہ خان کو ملازمت سے برخاست کر دیا گیا جبکہ انسپکٹر حسین غلام کو ریورٹ کرتے ہوئے سب انسپکٹر بنا دیا گیا۔

مزید : پشاورصفحہ آخر