بچوں کی کفالت نہیں کرسکتی ،انہیں باپ کو دے دیں ،ماں کی ہائی کورٹ سے استدعا ،عدالت نے مصالحت کے لئے وقت دے دیا

بچوں کی کفالت نہیں کرسکتی ،انہیں باپ کو دے دیں ،ماں کی ہائی کورٹ سے استدعا ...
بچوں کی کفالت نہیں کرسکتی ،انہیں باپ کو دے دیں ،ماں کی ہائی کورٹ سے استدعا ،عدالت نے مصالحت کے لئے وقت دے دیا

  

لاہور(نامہ نگارخصوصی )لاہورہائیکورٹ نے 4بچوں کو ماں کی تحویل سے لے کرباپ کے حوالے کرنے کے کیس میں میاں بیوی کو 12جولائی تک مصالحت کا موقع فراہم کرتے ہوئے بچوں کو عارضی طور پرماں کے ساتھ رہنے کی اجازت دے دی۔

موجودہ ماحولیاتی لیبارٹریوں کو فعال کرنے کی بجائے نئی لیبارٹری شروع کرنے پر ہائی کورٹ نے نوٹس لے لیا

جسٹس شاہد حمید ڈارنے محمد فیصل بیگ کی درخواست پرسماعت کی۔ درخواست گزار کے وکیل نے موقف اختیارکیا کہ عدالت نے 4سالہ حماد،7سالہ سعد،4 سالہ عائشہ بی بی اور 9 ماہ کی ام حانیہ کوماں کے حوالے کرنے کا حکم دے رکھا ہے۔وکیل کے مطابق میاں بیوی میں مصالحت کی کوشش کا عمل جاری ہے۔ماں کی استدعاہے کہ بچوں کی بہترطور پرکفالت نہیں کر سکتی ،بچے باپ کے حوالے کردیئے جائیں،عدالتی حکم پربچوں کو عدالت پیش کیا گیا۔عدالت میں ماں کا کہناتھا کہ خاوند گھریلو اخراجات پورے نہیں کرتا،عدالت نے فریقین کومصالحت کا موقع دیتے ہوئے بچوں کو عارضی طور پر ماں کے پاس رہنے دیا ۔

مزید : لاہور