پسماندہ علاقوں کی ترقی اوران کے حقوق کے تحفظ میں سنجیدہ ہیں ، سلطان محمد خان

پسماندہ علاقوں کی ترقی اوران کے حقوق کے تحفظ میں سنجیدہ ہیں ، سلطان محمد خان

پشاور(سٹاف رپورٹر)خیبر پختونخوا کے وزیر قانون و پارلیمانی امور اور انسانی حقوق سلطان محمد خان نے چھٹے زون بنانے کی تجویز کے حوالے سے اعلی سطح اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان تحریک انصاف کی حکومت پسماندہ علاقوں کی ترقی اور ان کے حقوق کی تحفظ میں کافی سنجیدہ ہے۔بروز بدھ پشاور سول سیکرٹریٹ میں ضلع شانگلہ،تورغر،بٹگرام اور کوہستان کو الگ زون میں شامل کر کے چھٹے زون بنانے کے حوالے سے صوبائی اسمبلی سے منظور قرارداد کے پس منظر میں پہلے اجلاس کا انعقاد وزیر قانون کی صدارت میں کیا گیا جس میں اراکین صوبائی اسمبلی پیر فدا محمد خان،سردار حسین بابک،سردار محمد یوسف زمان پختون یار،شاہ داد خان،تاج محمد خان،سیکرٹری اسٹیبلشمنٹ سید جمال الدین،سیکرٹری قانون ذکاءاللہ خٹک،چیئرمین خیبر پختونخوا پبلک سروس کمیشن فریداللہ اور دیگر اعلیٰ افسران نے شرکت کی۔اجلاس کے دوران تمام متعلقہ افسران نے موجودہ اسامیوں کے مختلف زونل کوٹہ سسٹم کے بارے میں بریفنگ دی اور تفصیلی تقابلی جائزہ لیا گیا۔دریں اثناءاراکین صوبائی اسمبلی نے بھی اپنے تحفظات اور خیالات کا اظہار کیا۔اجلاس میں طویل تقابلی جائزے کی روشنی میں چیئرمین کمیٹی سلطان محمد خان نے اراکین کی متفقہ باہمی رائے کی روشنی میں چھٹے زون کے بنانے کے لئے دو ذیلی کمیٹیاں تشکیل دیں جن میں ایک ذیلی کمیٹی قانونی اور آئینی لحاظ سے اور دوسری ذیلی کمیٹی معاشرتی،سیاسی اور اقتصادی لحاظ سے تجاویزمقررہ مدت میں اس کمیٹی کے آئندہ اجلاس میں پیش کریں گی جس کی روشنی میں نئے زون بنانے کے حوالے سے حتمی رپورٹ پیش کی جائے گی۔اجلاس کے آخر میں وزیر قانون وچیئرمین کمیٹی سلطان محمد خان نے دونوں ذیلی کمیٹیوں کو یقین دہانی کرائی کہ صوبائی حکومت ان کو سہارا مہیا کرے گی تاکہ پسماندہ علاقوں کی ترقی اورحقوق کی فراہمی میں کوئی کسر نہ رہے۔

مزید : پشاورصفحہ آخر