افغان باشندوں سمیت 5 رکنی خطر ناک موبائل سنیچرز گروہ گرفتار

افغان باشندوں سمیت 5 رکنی خطر ناک موبائل سنیچرز گروہ گرفتار

پشاور(کرائمز رپورٹر) کیپٹل سٹی پولیس پشاور نے ضلع بھر میں سرگرم موبائل سنیچرز گینگ کو بے نقاب کرتے ہوئے تین افغان باشندوں سمیت 5رکنی مسلح راہزن گروہ کو گرفتار کر لیا،گروہ میں شامل دو افراد کا تعلق شہر کے نواحی علاقوں سے ہے، ملزمان شہر کے مختلف تعلیمی اداروں میں زیر تعلیم طلباء کو خصوصی طور پر نشانہ بناکر ان سے قیمتی موبائل فونز چھینتے تھے جنہوں نے ابتدائی تفتیش کے دوران راہزنی کے متعدد وارداتوں میں ملوث ہونے کا اعتراف کر لیا ہے،ملزمان چھینے گئے موبائل فونز شہر کے مقامی موبائل مارکیٹ میں دھوکہ دہی کے ذریعے فروخت کرنے کے ساتھ ساتھ قیمتی موبائل فونز ہمسایہ ملک افغانستان سمگل کرتے تھے، ملزمان کی نشاندہی پر ان کے قبضے سے مختلف وارداتوں کے دوران چھینے گئے 45 عدد موبائل فونز بھی برآمد کر لئے گئے، برآمد کی جانے والی موبائل فونز کے اصل مالکان کا سراغ لگانے کے بعد تمام موبائل فونز ان کے حوالہ کی جائیں گی، گرفتار ملزمان سے مزیدتفتیش جاری ہے جس کے دوران ان سے اہم اور سنسنی انکشافات کی توقع کی جارہی ہے تفصیلات کے مطابق مدعی ذین اللہ ولد رزیم گل سکنہ ہنگو نے تھانہ تہکال پولیس کو رپورٹ درج کراتے ہوئے بیان کیا کہ وہ پشاور کے ایک نجی کالج میں زیر تعلیم ہے جبکہ اس سے کسی نامعلوم موٹر سائیکل سوارملزمان نے قیمتی موبائل فونز چھین کر فرار ہو گئے جن کی رپورٹس پر مقدمات درج کرکے تفتیش شروع کر دی گئی ایس ایس پی آپریشن ظہور بابر آفریدی نے طالب علم سے موبائل فون چھیننے کی واردات کا سختی سے نوٹس لیتے ہوئے ایس پی کینٹ وسیم ریاض کی سربراہی میں ڈی ایس پی ٹاؤن ارشد خان اور ایس ایچ او تھانہ تہکال شہر یار احمد پر مشتمل خصوصی ٹیم تشکیل دیتے ہوئے واردات میں ملوث ملزمان کو جلد از جلد ٹریس کرکے گرفتار کرنے کا ٹاسک حوالہ کیا،ڈی ایس پی ٹاون ارشد خان کی نگرانی میں ایس ایچ او شہر یار خان نے جدید سائنسی خطوط پر تفتیش کرتے ہوئے متعدد جرائم پیشہ افراد کا ڈیٹا اکٹھا کرنے کے ساتھ ساتھ متعدد مشتبہ افراد کو بھی شامل تفتیش کیا جبکہ متعدد مشکوک افراد کے بیانات بھی قلمبند کئے، اسی طرح ملوث ملزمان کا سراغ لگانے کی خاطر شہر کے مختلف موبائل مارکیٹ میں سادہ کپڑوں میں بھی پولیس اہلکاروں کو تعینات کیا جس کے دران طالب علم سے موبائل چھیننے میں ملوث اصل گروہ تک رسائی حاصل کرکے تین افغان باشندوں سمیت 5 خطر ناک موبائل سنیچر ز عامر ولد خلیل،شان ولد خورشید اور (ریسور) لعل محمد ولد عمر خان ساکنان افغانستان،شہاب ولد فقیر محمد سکنہ حسین چوک اور فراز ولد عبد العلی سکنہ خٹک کالونی کو گرفتار کر لیا، گرفتار ملزمان نے تھانہ پشتخرہ،تھانہ خزانہ،تہکال، شہید گلفت حسین،تھانہ پہاڑی پورہ،تھانہ ٹاؤن اور دیگر مختلف تھانوں کی حدود میں متعدد وارداتوں میں ملوث ہونے کا اعتراف کر لیا ہے جن کی نشاندہی پر ان کے قبضے سے 45 عدد مسروقہ موبائل فونز برآمد کرلئے گئے، ملزمان نے دوران تفتیش سرقہ شدہ موبائل فونز دھوکہ دہی کے ذریعے مقامی مارکیٹ میں فروخت کرنے کے ساتھ ساتھ قیمتی موبائل فونز ہمسایہ ملک افغانستان سمگل کرنے کا بھی انکشاف کیاہے، تمام ملزمان سے مزید تفتیش جاری ہے جس کے دوران ان سے مزید اہم اور سنسنی خیز انکشافات کی توقع کی جا رہی ہ

مزید : پشاورصفحہ آخر