بجٹ عوام پر خودکش حملہ ‘ ہر چیز مہنگی ‘ غریب کہاں جائیں ‘ امیر المعظم

بجٹ عوام پر خودکش حملہ ‘ ہر چیز مہنگی ‘ غریب کہاں جائیں ‘ امیر المعظم

ملتان ( سٹی رپورٹر) سیکرٹری جنرل جماعت اسلامی پاکستان امیر العظیم نے وفاقی بجٹ کو عوام دشمن قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ آئی ایم ایف کی ہدایت پر تیار کیا جانا والا بجٹ عوام پر خود کش حملہ ہے۔ حکومت نے ٹیکسٹائل سیکٹر سے لے کر چینی، گھی، گوشت تک ہر چیز کو عوام کی پہنچ سے باہر کردیا(بقیہ نمبر48صفحہ7پر )

 ہے۔ 70کھرب 36ارب کے بجٹ میں 3151ارب روپے کا خسارہ جبکہ 11کھرب روپے کے عوام پر ٹیکس لگائے گئے، جس سے ملک میں مہنگائی کا طوفان آئے گا۔ انہوں نے کہا کہ یوں محسوس ہوتا ہے کہ جیسے حکمرانوں کے پاس عوام کو طفل تسلیاں دینے اور مہنگائی ا ور بے روزگاری میں اضافہ کرنے کے سوا کچھ نہیں۔ حکومت نے پچاس لاکھ گھروں اور ایک کروڑ نوکریوں کے حوالے سے جو قوم سے وعدہ کیا تھا ، اس کی تکمیل کے حوالے سے ٹھو س اقدامات نہیں کیے گئے۔ پوری قوم تحریک انصاف کے پہلے بجٹ اور کارکردگی پر انگشت بدنداں ہے۔ سرکاری ملازمین کی تنخواہوں اور پنشن میں معمولی اضافہ شرمناک ہے۔ انہوں نے کہا کہ بجٹ میں سب سے زیادہ عوام اور چھوٹے تاجر متاثر ہوئے ہیں۔ تحریک انصاف نے اپنے ایک سالہ دور حکومت میں کسی ایک شعبے میں بھی اہداف کو حاصل نہیں کیا۔ جب تک ملک میں کرپشن اور منی لانڈرنگ کی روک تھام کے لیے ہنگامی بنیادوں پر اقدامات نہیں کیے جائیں گے ، معاشی صورتحال میں بہتری نہیں آسکتی ۔انہوں نے کہا کہ تعلیم وصحت اور جنوبی پنجاب کے پسماندہ عوام کی تعمیر و ترقی کے لیے مختص کیے جانے والا بجٹ ناکافی ہے، اس میں مزید اضافہ کیا جائے۔ حکمران اپنے اللے تللے ختم کرکے کفایت شعاری کو اختیار کریں۔ محض ڈنگ ٹپاﺅ اور دکھاوے کے اقدامات سے کچھ نہیں ہوگا۔ حکومت کی جانب سے کئی منصوبوں کی تنسیخ سے قومی مفاد عامہ کو شدیدنقصان پہنچے گا۔ مینوفیکچرنگ سیکٹر پر ٹیکسوں کے بوجھ میں اضافہ تشویشناک ہے، اس سے ہماری مصنوعات عالمی منڈیوں میں مقابلہ کرنے کی صلاحیت کھودیں گی۔

مزید : ملتان صفحہ آخر