چائلڈ لیبر کے خاتمے کے لیئے متعدد اقدامات کیے ہیں، مرتضی بلوچ

چائلڈ لیبر کے خاتمے کے لیئے متعدد اقدامات کیے ہیں، مرتضی بلوچ

کراچی (اسٹاف رپورٹر)صوبائی وزیر برائے محنت اور افرادی قوت غلام مرتضی بلوچ نے کہا ہے کہ چائلڈ لیبر معاشرے کے لئے ایک بدنما داغ ہے اور چائلڈ لیبر کے خاتمے کے لیے ہر سطح پر کام کرنے کی ضرورت ہے۔ جبکہ محکمہ محنت سندھ نے چائلڈ لیبر کے خاتمے کے لیئے متعدد اقدامات کیے ہیں جن کے مثبت نتائج سامنے آئیں ہیں۔ یہ بات انہوں نے بدھ کو چائلڈ لیبر ڈے کے حوالے سے منعقد ہونے والے ایک اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کہی۔ اجلاس کو بریفننگ دیتے ہوئے بتایا گیا کہ ضلع جامشورو کو چائلڈ لیبر فری ضلع قرار دیا گیا ہے اور اس بات کو یقینی بنانے کے لئے ڈائریکٹر لیبر کی سربراہی میں ایک ٹاسک فورس بھی تشکیل دی گئی ہے جو ضلع جامشورو کو چائلڈ لیبر فری ضلع بنانے کو یقینی بنائے گی۔ اجلاس کو مزید بتایا گیا کہ تمام فیکٹریوں اور متعلقہ اداروں کو اس بات کا پابند بنایا جارہا ہے کہ وہ کم عمر بچوں کو ملازم نہ رکھیں اور اس حکم کی خلاف ورزی کرنے والوں کے خلاف قانون کے مطابق کارروائی کی جاتی ہے۔ اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے صوبائی وزیر برائے محنت اور افرادی قوت غلام مرتضی بلوچ نے متعلقہ افسران کو ہدایت کی کہ وہ اس بات کو یقینی بنائیں کہ چائلڈ لیبر قوانین کی خلاف ورزی نہ کی جائے اور چائلڈ لیبر کے خاتمے کے لیئے ہر ممکن اقدامات کیے جائیں۔ انہوں نے مذید کہا کہ یہ ہماری ذمداری بنتی ہے کہ ہم اپنے بچوں کو تعلیم اور تربیت کے بہتر مواقع مہیا کریں تاکہ وہ ایک صحت مند معاشرے کی تشکیل کرسکیں۔ غلام مرتضی بلوچ کے مطابق بچے ہمارا مستقبل ہیں اور ایک صحت مند معاشرے کے لئے ان بچوں کی اچھی تربیت اور بہتر ماحول فراہم کرنا ہماری ذمداری ہے

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر