موجودہ کابینہ کا ڈوپ ٹیسٹ کیاجائے، مشاہد اللہ کا مطالبہ

  موجودہ کابینہ کا ڈوپ ٹیسٹ کیاجائے، مشاہد اللہ کا مطالبہ

اسلام آباد(آئی این پی) پاکستان مسلم لیگ(ن) کے سینئر رہنماسینیٹر مشاہد اللہ خان نے مطالبہ کیا ہے کہ وزیراعظم عمران خان کی پوری کابینہ کا ڈوپ ٹیسٹ کیاجائے،اگر ڈوپ ٹیسٹ نہ کیاگیا تو ملک آگے نہیں بڑھے گا،وزیراعظم کمیشن کے چیئرمین خود بن کر اپوزیشن کومارنا چاہتے ہیں ،ہم نے بہت ماریں کھائیں،مزید کھانے کو تیارہیں مگر جس دن عمران خان کو مار پڑی،اس دن ان کی بریک گولڈ سمتھ کے گھر سے پہلے کہیں نہیں لگنی۔بدھ کو پارلیمنٹ ہاؤس میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئیپاکستان مسلم لیگ(ن) کے سینئر رہنماسینیٹر مشاہد اللہ خان نے کہا کہ وزیراعظم عمران خان کی پوری کابینہ کا ڈوپ ٹیسٹ کیاجائے۔اگر ڈوپ ٹیسٹ نہ کیاگیا تو ملک آگے نہیں بڑھے گا جس کا ڈوپ ٹیسٹ مثبت آئے اسے کابینہ سے فارغ کیاجائے انہوں نے کہا کہ وزیراعظم کی جانب سے کمیشن کی سربراہی خود کرنا مضحکہ خیز ہے وزیراعظم سابق چیف جسٹس ثاقب نثار کو ہی کمیشن کا چیئرمین بنادیں وہ آج کل فارغ ہیں ماضی کی طرح وہ اس کمیشن کا بہتر نتیجہ دے سکتے ہیں انہوں نے کہا کہ کمیشن بھی ایک قسم کی جے آئی ٹی ہے،جے آئی ٹی بھی ثاقب نثار نے بنائی تھی وہ جے آئی ٹی بنانے میں ماہر ہیں سابق چیف جسٹس نے ہی وزیراعظم کو کمیشن بنانے کا مشورہ دیا ہے،سابق چیف جسٹس ماضی کی طرح اس کمیشن میں بھی کسی نہ کسی کا اقامہ نکال لیتے،وزیراعظم کمیشن کے چیئرمین خود بن کر اپوزیشن کومارنا چاہتے ہیں ہم نے عمران خان جیسے بہت لوگوں کو دیکھا ہے،ہم نے بہت ماریں کھائی ہیں مزید کھانے کو تیارہیں مگر جس دن عمران خان کو مار پڑی تو اس دن ان کی بریک گولڈ سمتھ کے گھر سے پہلے کہیں نہیں لگنی۔

مشاہد اللہ خان

مزید : صفحہ آخر